جبری شادی ایسی شادی کو کہا جاتا ہے جس میں یا تو دونوں فریقین یا کم از کم فریق پر زور دے کر شادی انجام پاتی ہے۔ ایسی شادیوں کے لیے کئی بار خصوصًا عورتوں کا اغوا کیا جاتا ہے۔

دنیا کے مختلف علاقے جہاں جبری شادی کے واقعات پیش آتے ہیںترميم

بھارتترميم

پاکستانترميم

ڈی آئی جی سندھ پولیس آفتاب پٹھان نے ایف آئی اے سندھ کی جانب سے منعقدہ مشاورتی ورکشاپ کے موقع پر بتایا تھا کہ 2014ء میں جبری شادی کے لیے خواتین کے اغوا کے 1,261 مقدمات درج ہوئے۔ اس سلسلے میں پانچ ملزمین قید میں ڈال دیا گیا تھا جبکہ 369 ملزمین کا مقدمہ زیر دوران تھا۔ دس سال سے کم عمر بچوں کے اغوا کے 45 مقدمات بھی درج کیے گئے تھے۔[1]

افریقاترميم

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم

==بیرونی روابط==*