جیک ایڈورڈز (کرکٹر, پیدائش 1860)

جان ڈنلوپ ایڈورڈز (پیدائش:12 جون 1860ءپرہران، میلبورن، وکٹوریہ)|وفات: 31 جولائی 1911ء ہاکس برن، وکٹوریہ،) ایک آسٹریلوی کرکٹ کھلاڑی تھا جس نے 1888ء میں انگلینڈ میں تین ٹیسٹ کھیلے۔

جیک ایڈورڈز
John Dunlop Edwards c1888.jpg
ذاتی معلومات
مکمل نامجان ڈنلوپ ایڈورڈز
پیدائش12 جون 1860(1860-06-12)
پرہران، وکٹوریہ
وفات31 جولائی 1911(1911-70-31) (عمر  51 سال)
جنوبی یارا، وکٹوریہ
بلے بازیدائیں ہاتھ کا بلے باز
گیند بازیلیگ بریک باؤلر
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 52)16 جولائی 1888  بمقابلہ  انگلینڈ
آخری ٹیسٹ30 اگست 1888  بمقابلہ  انگلینڈ
ملکی کرکٹ
عرصہٹیمیں
میلبورن کرکٹ کلب
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ فرسٹ کلاس
میچ 3 51
رنز بنائے 48 961
بیٹنگ اوسط 9.60 13.72
100s/50s 0/0 0/4
ٹاپ اسکور 26 65
گیندیں کرائیں 0 493
وکٹ 0 7
بولنگ اوسط 27.71
اننگز میں 5 وکٹ 0 0
میچ میں 10 وکٹ 0 0
بہترین بولنگ 2/6
کیچ/سٹمپ 1/0 19/0
ماخذ: CricketArchive، 14 دسمبر 2014

ابتدائی دورترميم

ایک حیرت انگیز آدمی ایڈورڈز نے ویزلی کالج میں تعلیم حاصل کی اور 1880-81ء میں وکٹوریہ کے لیے فرسٹ کلاس ڈیبیو کرنے سے پہلے میلبورن کرکٹ کلب کے لیے کھیلا[1] اس نے اگلے موسم گرما میں اپنا سب سے زیادہ اسکور بنایا (دورہ کرنے والی انگلش ٹیم کے خلاف 65) اس سے پہلے کہ اسے بینک کلرک کی ملازمت میں بینڈیگو میں منتقل کیا گیا[2] ایڈورڈز کا دفاع مضبوط تھا اور وہ ایک عمدہ فیلڈ مین تھے۔ 1888ء میں انگلینڈ کے دورے کے لیے ان کا انتخاب کلب میچوں میں ان کے بڑے اسکور کی وجہ سے ہوا تھا۔ اس دورے پر تین ٹیسٹ میچوں میں انہوں نے تینوں میچوں میں مڈل آرڈر میں بیٹنگ کرتے ہوئے 9.60 کی اوسط حاصل کرتے ہوئے 6 اننگز میں تین صفر بنائے۔ ایڈورڈز نے مجموعی طور پر فرسٹ کلاس کرکٹ میں صرف تھوڑا بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کیا، 51 میچ کھیلے اور 13.72 کی اوسط سے 961 رنز بنائے[3]

انتقالترميم

اعصابی خرابی کی وجہ سے 31 جولائی 1911ء میں ہاکس برن، وکٹوریہ کے مقام پر بیماری میں اضافے کے بعد 51 سال 49 دن کی عمر میں موت ہوگئی[4]

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم