"طہ کران" کے نسخوں کے درمیان فرق

16 بائٹ کا ازالہ ،  1 مہینہ پہلے
م
خودکار: درستی املا ← دار العلوم، علما، لیے، انسٹی ٹیوٹ، کورونا وائرس؛ تزئینی تبدیلیاں
(+ خانہ معلومات)
م (خودکار: درستی املا ← دار العلوم، علما، لیے، انسٹی ٹیوٹ، کورونا وائرس؛ تزئینی تبدیلیاں)
|founder = {{bulleted list|مھجہ ریسرچ انسٹیٹیوٹ|دار العلوم العربیہ الاسلامیہ}}
}}
'''طہ کران''' (2 جون 1969 – 11 جون 2021) جنوبی افریقہ کے ایک شافعی عالم اور فقیہ تھے۔ وہ "مسلم جوڈیشیل کونسل" کے صدر مفتی، مھجہ ریسرچ انسٹیٹیوٹانسٹی ٹیوٹ اور دار العلوم العربیہ الاسلامیہ، سٹرینڈ، [[کیپ ٹاؤن]] کے بانی تھے۔
 
== سوانح ==
طہ کران [[کیپ ٹاؤن]] میں یوسف کران کے یہاں پیدا ہوئے۔<ref name="chenab">{{cite news |title=Muslim world at loss, Mufti Taha Karaan passes away |url=https://thechenabtimes.com/2021/06/12/muslim-world-at-loss-mufti-taha-karan-passes-away/ |access-date=12 جون 2021 |work=دی چناب ٹائمز |date=12 جون 2021}}</ref><ref name="seekers">{{cite web |title=If Only Someone Else Said it, Mufti Taha Karaan of South Africa |url=https://seekersguidance.org/scholar/mufti-taha-karaan/ |publisher=سیکرز گائیڈینس |access-date=11 جون 2021 |date=11 اگست 2020}}</ref> انہوں نے واٹر فال اسلامک انسٹیٹیوٹانسٹی ٹیوٹ سے قرآن حفظ کیا اور1991 میں [[دارالعلوم دیوبند]] سے اعلیٰ درجے کے ساتھ درس نظامی کی تکمیل کی۔اس کے بعد انہوں نے [[جامعہ قاہرہ]] سے دو-سالہ ڈپلوما کیا۔<ref name="chenab"/><ref name="radio">{{cite news |title=SA & Global Muslim Ummah Shattered by Passing of Great Islamic Scholar Mufti Taha Karaan |url=https://www.radioislam.org.za/a/listen-global-muslim-ummah-shattered-by-passing-of-great-islamic-scholar-mufti-taha-karaan/ |access-date=11 جون 2021 |work=ریڈیو اسلام |date=11 جون 2021}}</ref> ان کے اساتذہ میں [[سعید احمد پالنپوری]] شامل ہیں۔<ref name="chenab"/> طہ [[شافعی]] تھے لیکن [[حنفی|احناف]] سے بہت قریب تھے اور خود کو [[دیوبندی|دیوبندیت]]ت سے منسوب کرتے تھے۔<ref name="tariq">{{cite journal |editor1-last=محمود |editor1-first=طاہر |title=مولانا اعظم طارق شہید نمبر |journal=ماہنامہ خلافت راشدہ |pages=227, 231 |publisher=[[سپاہ صحابہ پاکستان]] |location=[[فیصل آباد]] |language=اردو}}</ref>
 
طہ کران کو جنوبی افریقہ میں ایک ممتاز مفکر تسلیم کیے جاتے تھے۔<ref name="haberler">{{cite news |title=Güney Afrikalı Müslüman Yargı Konseyi Müftüsü Karaan vefat etti |trans-title=Moulana Taha Karaan, Mufti of the Muslim Judicial Council (MJC) in the Republic of South Africa, passed away.|url=https://www.haberler.com/guney-afrikali-musluman-yargi-konseyi-muftusu-14194412-haberi/ |access-date=11 جون 2021 |work=Haberler |language=ترکی }}</ref> خلیل ابراہیم ملا خاطر نے انہیں "الشافعی الصغیر" کا لقب دیا۔<ref name="chenab"/> 1996 میں طہٰ کران نے اسٹرینڈ میں دارالعلومدار العلوم العربیہ الاسلامیہ قائم کیا۔<ref name="seekers"/><ref name="duai">{{cite book |url=https://books.google.com/books?id=8kLvCgAAQBAJ&q=taha+karaan&pg=PT83 |access-date=11 June 2021|title=Muslim Institutions of Higher Education in Postcolonial Africa|isbn=9781137552310|last1=Lo|first1=Mbaye|last2=Haron|first2=Muhammed|date=26 جنوری 2016}}</ref> 2015 میں اپنے والد یوسف کران کے بعد "مسلم جوڈیشیل کونسل " کے صدر مفتی منتخب ہوئے۔<ref name="news24"/> اصحاب{{زیر}} محمد کے دفاع کے لئےلیے انہوں نے "مھجہ ریسرچ انسٹیٹیوٹانسٹی ٹیوٹ " قائم کیا۔<ref name="chenab"/> جنوبی افریقہ میں انہیں [[اہل تشیع]] سے مناظروں کے لئےلیے پہچانا جاتا تھا۔ [[اعظم طارق (سپاہ صحابہ پاکستان)|اعظم طارق]] نے 1990 کے آس پاس ان کی [[اہل تشیع]] سے مناظرانہ صلاحیت کو غیر معمولی قرار دیا تھا۔<ref name="tariq"/> طہ کران نے "قسمت سے بھاگنا: چھوت اور وبائی امراض سے متعلق 40 حدیثیں" {{دیگر نام|انگریزی=Fleeing from Fate to Fate: 40 Ahadith on Contagion and Pandemics}} حال ہی میں ایک کتاب لکھی تھی۔<ref name="chenab"/>
 
 
طہ کران کا انتقال 11 جون 2021 کو کروناکوکورونا وائرس کی وجہ سے ہوا۔<ref name="news24"/> مسلمان علماءعلما اور دانشوران [[اسماعیل بن موسیٰ مینک]]، [[عبد الرحمن بن یوسف مانگیرا]]، [[عمر سلیمان (امام)|عمر سلیمان]] اور یاسر قاضی نے ان کی وفات پر غم کا اظہار کیا۔<ref name="chenab"/>
 
== حوالہ جات ==
{{حوالہ جات}}
111,622

ترامیم