روحانی نفسیات روحانیت اور سائنس کی ایک آمیزش ہے۔ یہ روایتی نفسیات کے عناصر اور روحانیت کے استعمال سے افراد کو بہتر بننے اور زندگیوں سے مطمئن ہونے میں معاون ہے۔[1]

اس کی چند مثالیں اس طرح ہیں:

  1. مسیحیت میں، بطور خاص کاتھولک طبقے میں پادری کے رو برو اقرار گناہ اور معافی کا تصور۔[1]
  2. اسلام کا تصور کہ انسان کی پکار سیدھے خدا تک پہنچتی ہے۔[2] یا یہ کہ مایوسی کفر ہے۔[3]

افادیت

ترمیم

روحانی نفسیات کو بطور خاص ان حالات کے لیے موزوں بتایا گیا:

  • معاشی بحران
  • انتہائی مایوسی کے وقت جب کسی مدد کے ذرائع نہ ہو نہ کوئی امید ہو۔[1]

مزید دیکھیے

ترمیم

حوالہ جات

ترمیم