رُکن :کسی شے کارکن وہ چیز ہوتی ہے جس سے اس شے کی تکمیل ہو

لغوی معنیترميم

کسی چیز کی وہ جانب جس کے سہارے پر وہ قائم ہوتی ہے استعارہ کے طور پر زور اور قوت کے معنی میں استعمال ہوتا ہے۔

اصطلاحی معنیترميم

اصطلاح فقہ میں وہ چیز اس پر کسی شے کا وجود موقوف ہواور وہ خود اس شے کا حصہ یا جزو ہوجیسے نمازمیں رکوع اور قرأت یا نکاح میں ایجاب و قبول وغیرہ۔ رکن کے فوت ہونے سے وہ عبادت یا معاملہ فوت ہو جاتا ہے[1]

حوالہ جاتترميم

  1. قاموس الفقہ جلد سوم،صفحہ 493،خالد سیف اللہ رحمانی،زمزم پبلشر کراچی2007ء