ریحانہ جباری

ریحانہ جباری ایک ایرانی خاتون تھی۔ وہ بین الاقوامی سرخیوں میں اس وقت آگئ تھی جب اس نے ایرانی انٹلی جنس اہل کار مرتضٰی سربندی کا 2007ء میں قتل کردیا تھا۔

مقدمہترميم

ریحانہ جباری پر مقدمہ سات سال تک چلتا رہا۔ اس کا دعوٰی تھا کہ سربندی اس کی عزت لوٹنا چاہتا تھا، اس لیے اس نے یہ اقدام قتل اٹھایا۔ تاہم ایرانی عدالت نے اس کی دلیلوں خارج کردیا۔ اس کے بعد 25 اکتوبر 2014ء کو اسے پھانسی دے دی گئی تھی۔

آخری خواہشترميم

ریحانہ نے مرنے سے پہلے خواہش کی کہ اس کے جسم کے اعضاء کا عطیہ دیا جائے۔ [1]

حوالہ جاتترميم