ریجنلڈ الیگزینڈر "ریگی" ڈف (پیدائش:17 اگست 1878ء بوٹینک گارڈنز، میکوری، سڈنی، نیو ساؤتھ ویلز)|وفات: 13 دسمبر 1911ء سینٹ لیونارڈز، نارتھ سڈنی، نیو ساؤتھ ویلز،) ایک آسٹریلوی کرکٹ کھلاڑی تھا[1] جس نے 1902ء اور 1905ء کے درمیان 22 ٹیسٹ کھیلے۔ ڈف نے اپنا ٹیسٹ ڈیبیو واروک آرمسٹرانگ کے ساتھ ملبورن میں انگلینڈ کے خلاف 1901-02ء میں کیا اور 1104 رنز بنائے۔ دوسری اننگز میں خراب پچ کی وجہ سے نمبر دس تک روکے جانے کے بعد[2] یہ اننگز ٹیسٹ نمبر دس کی پہلی مثال تھی جس نے پہلے ٹیسٹ میں سنچری بنائی اور کسی کی طرف سے اس کم ترتیب سے صرف چار سنچریوں میں سے ایک۔ وہ ایک ماہر بلے باز تھے اور اگلے ٹیسٹ کی دوسری اننگز میں اوپننگ کی۔ انہوں نے اپنے آخری ٹیسٹ میچ میں بھی سنچری بنائی، پہلے ٹیسٹ میں سنچری بنانے کے ساتھ ساتھ اپنے آخری ٹیسٹ میں بھی سنچری بنانے والے پہلے بلے باز بن گئے۔ ان کے اب بنگلہ دیش کے کرکٹ کھلاڑی ابوالحسن نے 2012ء میں دسویں نمبر پر پہلے ہی ٹیسٹ میں سنچری بنا کر دوسرے کھلاڑی کا اعزاز اپنے نام کیا۔ [3]

ریگی ڈف
Reggie Duff c1905.jpg
ذاتی معلومات
مکمل نامریگینالڈ الیگزینڈر ڈف
پیدائش17 اگست 1878(1878-08-17)
سڈنی، نیو ساؤتھ ویلز
وفات13 دسمبر 1911(1911-12-13) (عمر  33 سال)
سینٹ لیونارڈز، نیو ساؤتھ ویلز
بلے بازیدائیں ہاتھ کا بلے باز
گیند بازیدائیں ہاتھ کا میڈیم باؤلر
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ فرسٹ کلاس
میچ 22 121
رنز بنائے 1317 6589
بیٹنگ اوسط 35.59 35.04
100s/50s 2/6 10/33
ٹاپ اسکور 146 271
گیندیں کرائیں 180 917
وکٹ 4 14
بولنگ اوسط 21.25 34.14
اننگز میں 5 وکٹ 0 0
میچ میں 10 وکٹ 0 0
بہترین بولنگ 2/43 2/17
کیچ/سٹمپ 14/0 73/0
ماخذ: Cricinfo

ریگی ڈف کی سوانح عمریترميم

ریک سیسن نے 2015ء میں ڈف کی سوانح عمری لکھی جس کا عنوان ریگی، شہرت کے پانچ سال، ریگ ڈف کی کہانی تھا۔

انتقالترميم

ڈف کا کیریئر شراب نوشی کی وجہ سے متاثر ہوا، اور وہ 13 دسمبر 1911ء میں 33 سال اور 118 دن کی عمر میں اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔ ان کے دوستوں نے ان کی آبائی ریاست سے نیو ساؤتھ ویلز تک ان کے جنازے میں شرکت کی۔ [4] [5]

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم