عکاد کے سرگون (انگریزی: Sargon of Akkad)کے دور بادشاہت کی تاریخ میں اگرچہ کافی اختلاف ہے لیکن اکثر مورخین اور ماہرین آثار قدیمہ جو اس کا دور بتاتے ہیں وہ 2334-2279 قبل مسیح یعنی تقریباً حضرت ابراہیم علیہ السلام کے زمانے کا ہے۔[1]

پیدائشترميم

سرگون کی پیدائش کی کہانی کا ذکر ساتویں صدی قبل مسیح کی ایک آشوری( Neo Assyrian) تحریر یعنی سرگون کی وفات کے 15 سو سال بعد ملتا ہے جس کا مطلب ہے کہ سرگون کی پیدائش کی وہ کہانی جس میں اسے ایک پجارن کا ناجائز بیٹا قرار دیا گیا ہے جس نے اسے پیدائش کے بعد ایک صندوق میں رکھ کر پانی میں بہا دیا اور بعد ازاں ایک شخص نے پانی سے نکال کر مجھے اپنا بیٹا بنا لیا اور بعد ازاں میں بادشاہت کے مرتبے پہ فائز ہوا، سرگون کی وفات کے پندرہ سو سال بعد مرتب کی گئی اور یہ سرگون کے اپنے دور یعنی 2279-2234 قبل مسیح سے تعلق نہیں رکھتی۔

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم