مرکزی ادارہ شماریات، اسرائیل

مرکزی ادارہ شماریات اسرائیل (عبرانی: הלשכה המרכזית לסטטיסטיקה‎، مخفف: CBS) اسرائیل کا ایک سرکاری دفتر ہے جس کا قیام سنہ 1949ء میں عمل میں آیا۔ اس ادارہ کا مقصد اسرائیلی زندگی سے متعلق تمام تر شعبہ جات بشمول آبادی، سماج، معاشیات، صنعت، تعلیم اور ظاہری بنیادی ڈھانچے کے اعداد و شمار کی تحقیق کرنا اور انہیں شائع کرنا ہے۔ سی بی ایس کا مرکزی دفتر گیوت شول میں اور دوسرا دفتر تل ابیب میں واقع ہے۔[1]

مرکزی ادارہ شماریات اسرائیل
הלשכה המרכזית לסטטיסטיקה
اسرائیل کے مرکزی ادارہ شماریات کا لوگو
مخففCBS
قیام1949؛ 71 برس قبل (1949)
صدر دفاترGivat Shaul، یروشلم
ویب سائٹcbs.gov.il
یروشلم میں سی بی ایس

جائزہترميم

اس کا صدر حکومت کا منتخب کردہ ماہر اعداد و شمار ہوتا ہے جس کا تقرر وزیر اعظم اسرائیل کی تجویز سے عمل میں آتا ہے۔ جامعہ عبرانی یروشلم کے پروفیسر شلومو یطزاخی نے اس عہدہ پر رہتے ہوئے سی بی ایس کے ڈائریکٹر کی حیثیت سے سنہ 2002ء سے اپنی خدمات انجام دے رہے ہیں۔[2] سنہ 2011 میں بیورو کا سالانہ بجٹ 237 ملین شیقل تھا۔[3]

طریقہ کارترميم

سی بی ایس اپنے کاموں میں عالمی مقبول شدہ معیار کو اپناتا ہےجس میں شماریاتی معلومات کا دوسرے ممالک کی معلومات سے موازنہ بھی کیا جاتا ہے۔

سی بی ایس مندرجہ ذیل شعبہ جات کا کا یومیہ، ماہانہ، سہ ماہی اور سالانہ ڈاٹا جمع کرتا ہے؛

  • قومی معشیت (پیداوار، کھپت، سرمایہ کاری، مزدوری آمدنی اور بچت)۔
  • غیر ملکی تجارت اور ادائیگی میں توازن۔
  • معاشیات کی مختلف شاخوں کی سرگرمییاں جیسے کھیتی باڑی، مینو فیکچرنگ، تعمیرات، مواصلات، اقتصاد اور خدمات وغیرہ۔
  • اشیاء اور خدمات کی قیمتیں۔
  • آبادی، خاندان، روزگار، تعلیم، صحت، جرائم، حکومتی خدمات اور دیگر۔

سی بی ایس ہر دس سال میں آبادی اور گھربار کی مردم شماری بھی کرتا ہے اور مختلف قسم موضوعات میں دورانیہ اور ایک بار سروے کرنا بھی اسی کی ذمہ داری ہے۔[4]

جوابدہیترميم

سی بی ایس عوامی کمیشن برائے اعداد و شمار کی نگرانی میں کام کرتا ہے۔ اس کے جمع کردہ ڈاٹا کو وسیع پیمانے پر شائع کیا جاتا ہے جس میں اسرائیل کے اعداد و شمار کا خلاصہ بھی شامل ہے۔ یومیہ اخبار کے ذریعے موجودہ اور تجدید شدہ معلومات کو عوام کے سامنے پیش کیا جاتا ہے۔ حکومتی وزرا اس کے ڈاٹا کو پالیسی بنانے، منصوبہ بندی اور ترقیاتی کاموں کا جائزہ لینے میں استعمال کرتے ہیں۔ نیز اس کے ڈاٹا کو تعلیمی و تحقیقی اداروں اور عوام کے ذاتی استعمال کے لیے بھی مہیا کروایا جاتا ہے۔[4]

حوالہ جاتترميم

  1. Statistics Ordinance
  2. "Hebrew University Faculty Research Interests". 26 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 17 اگست 2012. 
  3. Lahav, Avital (September 11, 2012). "Chief Statistician: "Finance Ministry Plays With the Data"" (بزبان عبرانی). 26 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ September 12, 2012. 
  4. ^ ا ب The Roles of the Central Bureau of Statistics (CBS) and Methods of Operation

بیرونی روابطترميم