میلاد یا مولد کا معنی پیدائیش یا ولادت کا وقت ہے۔ قرآن مجید میں یحییٰ بن زکریا اور عیسیٰ ابن مریم کی ولادت کا ذکر ہے۔

یحییٰترميم

یحییٰ بن زکریا کے لیے قرآن میں آیت ہے۔   وَسَلَامٌ عَلَيْهِ يَوْمَ وُلِدَ وَيَوْمَ يَمُوتُ وَيَوْمَ يُبْعَثُ حَيًّا    
"اور سلامتی ہے اس پر جس دن پیدا ہوا اور جس دن مرے گا اور جس دن مردہ اٹھایا جائے گا"

عیسیٰترميم

عیسیٰ ابن مریم کے میلاد کا ذکر قرآن میں یوں ہے۔   وَالسَّلَامُ عَلَيَّ يَوْمَ وُلِدتُّ وَيَوْمَ أَمُوتُ وَيَوْمَ أُبْعَثُ حَيًّا    
"اور وہی سلامتی مجھ پر جس دن میں پیدا ہوا اور جس دن مروں اور جس دن زندہ اٹھایا جاؤں" اور مسیحیت میں عید ولادت مسیح بھی اسی معنی میں استعمال ہوتا ہے۔

محمدترميم

مسلمانوں میں میلاد یا مولد سے مراد سید الانبیاء محمد بن عبد اللہ کی ولادت ہے۔ یعنی میلاد النبی(عربی: مَوْلِدُ آلنَبِيِّ‎) کو کہا جاتا ہے۔

حوالہ جاتترميم