ڈیرا سچا سودا سکھ مذہب سے علاحدہ ایک فرقے کا نام ہے۔ اس کے رہنما سنت گرمیت رام رحیم سنگھ انسان ہیں۔

سکھ مذہب سے تنازعترميم

ڈیراسچا سودا اور سکھ مذہب کے درمیان تنازع کا سبب سنت گرمیت رام رحیم سنگھ کا ایک اشتہار ہے جس میں وہ خود کو سکھوں کے دسویں گرو گروگوبند سنگھ، کے انداز میں دکھایا تھا۔ اکال تخت اسے گرو کی اہا نت مانتی ہے۔ تخت نے پنجاب سے ڈیرے بند کرنے کی دھمکی بھی دی تھی۔

اس معاملے میں ڈیرہ کے سربراہ نے کئی بار کہا ہے کہ سکھوں کے جذبات مجروح کرنے کا ان کا کوئی ارادہ نہیں تھا۔ لیکن اکال تخت کا کہنا ہے کہ بابا رام رحیم سکھوں سے معافی مانگنے میں سنجیدہ نہیں ہیں۔[1]

شمالی بھارت کے کچھ علاقوں میں ڈیرا کی حاشیہ برداریترميم

پنجاب و ہریانہ کے کچھ علاقوں میں ڈیرا کے لوگ اپنے مذہبی مراسم سے پہلے مقامی سکھوں کو اطلاع دیتے ہیں۔ نہ دینے کی صورت میں کبھی کبھی تصادم کی نوبت آ جاتی ہے۔[2]

حوالہ جاتترميم