مرکزی مینیو کھولیں

17 فروری 2016ء کو، ترکی کے دار الحکومت انقرہ میں، بم حملوں کم از کم 28 افراد ہلاک اور 61 زخمی ہوئے ہیں۔[1] حملے میں فوجی گاڑیوں کے ایک قافلے کو نشانہ بنایا گیا۔[3] یہ حملہ ایک کار بم دھماکا تھا، دھماکا خیز مواد سے بھری ایک گاڑی اس وقت دھماکے سے پھٹ گئی، جب ایک فوجی قافلہ اس کے قریب سے گزر رہا تھا۔ یہ دھماکا پارلیمان اور ملٹری ہیڈکوارٹر کے قریبی علاقے میں ہوا ہے۔[4][5][6]

ترکی زبان: 2016 Ankara saldırısı
مقام انقرہ، ترکی
متناسقات 39°54′55″N 32°50′26″E / 39.9154°N 32.8406°E / 39.9154; 32.8406متناسقات: 39°54′55″N 32°50′26″E / 39.9154°N 32.8406°E / 39.9154; 32.8406
تاریخ 17 فروری 2016
6:31 p.m. (UTC+2)
نشانہ فوجی اہلکار
حملے کی قسم کار دھماکاing, خودکش حملہ
ہلاکتیں 27 فوجی اہلکار
1 شہری[1][2]
زخمی 61[1]
مرتکب Salih Necar (alleged)
مشتبہ مرتکبین PKK
PYD's YPG [2]
مقصد نامعلوم

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب پ "Ankara'da askeri servis aracına bombalı saldırı"۔ CNN Türk (Turkish زبان میں)۔ 17 فروری 2016۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 فروری 2016۔
  2. ^ ا ب "Davutoğlu: PKK ve YPG birlikte yaptı"۔ الجزیرہ (Turk) (Turkish زبان میں)۔ 18 فروری 2016۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 فروری 2016۔ |archive-url= is malformed: save command (معاونت)
  3. Constanze Letsch (17 فروری 2016)۔ "Up to 28 killed by Ankara car bomb targeting military personnel"۔ The Guardian (انگریزی زبان میں)۔ ISSN 0261-3077۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 فروری 2016۔
  4. "Turkey's capital Ankara rocked by deadly explosion"۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  5. "Ankara blast: Five dead after explosion in Turkish capital"۔ BBC News۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  6. Jason Hanna and Hamdi Alkhshali (17 فروری 2016)۔ "Explosion strikes Turkey's capital"۔ CNN۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔