ابن عطاء الله سكندری

ابن عطاء اللہ السکندری (658 ھ / 1260ء - 709 ھ / 1309ء) ایک مالکی فقہا اور صوفیانہ ، شاذلی طریقت تھے، بلکہ ، وہ شاذلیہ صوفی ترتیب کے ستونوں میں سے ایک تھے، جس کا نام "قطب العارفین "،" ترجمان الواصلين " اور" مرشد السالکن "۔ وہ ایک نیک ، باشعور آدمی تھا جو ایک کرسی پر تقریر کرتےتھےاور بہت سارے لوگوں کے ساتھ آپ کی تقریر میں حاضر ہوتے تھے اور آپ کی تبلیغ کا دلوں پر اثر پڑتا تھا اور آپ کواہل حق اور راہ حق کے لوگوں کے کلام اور طریقت کا مکمل علم تھا اور آپ کو صوفیاء کے کلام اور پیش رو کے نشانات کا ذوق اور علم تھا۔ لوگوں نے آپ کے اشاروں سے فائدہ اٹھایا۔ روح اور عظمت میں آپ کا مقام ہے۔

شیخ  ویکی ڈیٹا پر (P511) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ابن عطاء الله سكندری
(عربی میں: أحمد بن مُحمَّد بن عبد الكريم بن عبد الرحمٰن بن عبد الله بن أحمد بن عيسى بن الحُسين بن عطاء الله الجذامي السكندري ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1260[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اسکندریہ  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 21 نومبر 1309 (48–49 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
قاہرہ  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
تلمیذ خاص تقی الدین سبکی  ویکی ڈیٹا پر (P802) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ مصنف،  فقیہ  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان عربی  ویکی ڈیٹا پر (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان عربی[1]  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تحریک سلسلہ شاذلیہ  ویکی ڈیٹا پر (P135) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
P islam.svg باب اسلام

نام اور پرورشترميم

نام تاج الدین ابو الفضل احمد ابن محمد ابن عبد الکریم ابن عبد الرحمٰن ابن عبد اللہ ابن احمد ابن عیسی ابن الحسین ابن عطاء اللہ الجازمی نسب کے لحاظ سے ہیں۔ آپ کےدادا، سے منسوب کیا گیا ہے جو کے قبیلے جزام میں آئے آپ کے آبا و اجداد اسلامی فتح کے بعد مصر آئے تھے، جہاں ابن عطاءاللہ سن 658 ہجری کے قریب 1260 ء میں پیدا ہوا تھا اور اپنے دادا شیخ ابو محمد عبد الکریم کے دادا کی حیثیت سے بڑااسلامی علوم میں کام کرنے والے ایک فقیہ ابی محمد عبد الکریم بن عطا اللہ ، جہاں انہوں نے جوانی ہی سے دینی ، قانونی اور لسانی علوم حاصل کیے تھے۔

آپ کا تصوف کا راستہترميم

 
شاہدلی ترتیب کی نشریات کا سلسلہ جس میں ابن عطاء اللہ الاسکنداری کا نام ظاہر ہوتا ہے

شاگردترميم

تصانیفترميم

وفاتترميم

 
بن عطاء اللہ الاسکندری مسجد

شیخ ابن عطاء اللہ ا نتقال سن 709 ہجری میں قاہرہ کے منصوریہ اسکول میں ہوا تھا اور اسے کونے میں پہاڑ کے دامن میں موکتم قبرستان میں دفن کیا گیا تھا جس میں وہ عبادت کرتے تھے۔ آپ کا مقبرہ اب بھی المُقطمِ نیچے سیدی علی ابو الوفا . امام اللیث کے قبرستان کے مشرقی طرف سے۔ 1973 میں ان کی قبر پر ایک مسجد تعمیر کی گئی تھی

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب پ http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb119081420 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ