ازالۃ الخفا عن خلافۃ الخلفاء

ازالۃ الخفاء عن خلافۃ الخلفاء شاہ ولی اللہ محدث دہلوی کی کتاب ہے۔ اصل کتاب فارسی زبان میں ہے

مصنفترميم

نام قطب الدین عرف ولی اللہ بن عبد الرحیم بن الشہید وجیہ الدین بن معظم بن منصور جو علمی دنیا میں شاہ ولی اللہ محدث دہلوی کے نام سے معروف ہیں۔ آپ کی ولادت 14 شوال 1114ھ / 2 مارچ 1703ء کو ہوئی۔ آپ 26 محرم 1176ھ / 17 اگست 1762ء کو وفات پا گئے۔[1]

کتاب کا موضوعترميم

شاہ صاحب کے زمانے میں اہل تشیع دہلی اور لکھنؤ کے آس پاس کے علاقوں میں کافی زور پکڑ گئے تھے۔ ان کے جواب میں آپ نے یہ کتاب لکھی۔ شاہ ولی اللہ محدث دہلوی کی اس تصنیف کا موضوع اسلامی ریاست اور اس کا نظام ہے۔ جس میں خلافت راشدہ سے لے کر عمومی اسلامی نظام پر بحث کی گئی ہے۔

کتاب کی تفصیلترميم

یہ کتاب چار جلدوں پر مشتمل ہے۔ پہلی جلد میں ابوبکر اور عمر فاروق کی خلافت کو قرآنی آیات سے درست ثابت کیا گیا ہے اور خلافت عامہ اور خاصہ پر بحث کی گئی ہے۔ دوسری جلد میں احادیث نبوی سے استدلال کیا گیا ہے کہ شیخن کی خلافت، پیشن گوئیاں نقل کی گئی ہیں۔ تیسری جلد میں عمر کے فیصلے جو انھوں نے اپنے زمانہ خلافت میں صادر فرمائے، لکھے گئے ہیں۔ ان کا اردو ترجمہ ہوچکا ہے۔ معراج محمد بارق کتاب کے اردو ترجمہ پر تبصرہ کرتے ہوئے لکھتے ہیں : "علمائے امت نے خلافت کے موضوع پر اور خلفاء راشدین کے فضائل و مناقب میں بے شمار کتابیں تالیف کیں۔۔۔۔ منجملہ ان کے شاہ ولی اللہ دہلوی کی ازالۃ الخفاء ہے۔ جو اپنے موضوع پر بے مثال اور لاثانی کتاب ہے۔ خلافتِ راشدہ کی حقانیت اور تفضیلِ شیخین کا دلائلِ عقلیہ اور نقلیہ سے اثبات جن عجیب و غریب انداز سے فرمایا ہے وہ محیرالعقول ہے۔ "

ضخامت اور زبانترميم

یہ کتاب دو ہزار سے زائد صفحات پر مشتمل ہے اور فارسی زبان میں لکھی گئی ہے۔

تراجمترميم

اس کتاب کا عربی زبان میں ترجمہ محمد بشیر سیالکوٹی مدیر دارالعلم، اسلام آباد نے 2013ء میں مکمل کیا ہے۔ یہ مئی 2016ء میں دارالعلم آبپارہ مارکیٹ اسلام آباد سے شائع ہوا۔

اردو زبان میں اس کا ترجمہ عبد الشکور فاروقی مجددی اور اشتیاق احمد قاسمی نے کیا ہے جو قدیمی کتب خانہ آرام باغ کراچی سے شائع ہوا۔

حوالہ جاتترميم

  1. ازالۃ الخفاءعن خلافۃ الخلفاء، شاہ ولی اللہ محدث دہلوی، قدیمی کتب خانہ آرام باغ کراچی