باب:انٹرنیٹ/box-header

نولکھائی درکار صفحات
(تازہ کریں)
تمام مقالات 2
انٹرنیٹ کا عوامی استعمال۔

انٹرنیٹ اور حبالہ

تخلیق انٹرنیٹ

آج کا انٹرنیٹ

امارہ عالم انٹرنیٹ کے مطابق 30 جون 2006ء تک ایک ارب چار کروڑ سے زائد افراد انٹرنیٹ تک رسائی حاصل کر رہے تھے۔

انٹرنیٹ کے دستور (Protocols)

انٹرنیٹ کے قواعد و ضوابط، جن کو دستور یا پروٹوکول کہا جاتا ہے کے تین درجات ہیں :

  • سب سے پہلا درجہ یا سطح IP کا ہے جو ان گراف مواد یا رزموں کا تعین کرتی ہے جو مواد کے قطعات (blocks) کو ایک عقدہ سے دوسرے عقدہ تک منتقل کرتے ہیں۔ آج کے شبکوں کی اکثریت IP دستور کا متن چہارم (IPv4) استعمال کرتی ہے۔ گو IPv6 کا بھی معیار مقرر ہوچکا ہے مگر ابھی تک اکثر انٹرنیٹ خدمت فراہم کنندہ اس کو شناخت نہیں کرتے۔
  • اس کے بعد TCP اور UDP آتے ہیں جن کے ذریعہ ایک میزبان دوسرے کو مواد ارسال کرتا ہے۔ اول الذکر ایک طرح کا مجازی رابطہ بھی بنالیتا ہے جس کی وجہ اس پر انحصار نسبتا یقینی ہوتا ہے جبکہ آخر الذکر ایک بلا رابط دستور ہے جس کی وجہ سے ترسیل کے دوران میں ضائع ہوجانے والے رزمے دوبارہ نہیں بھیجے جاسکتے ۔
  • اور سب سے بالائی درجہ پر نفاذی دستور آتے ہیں جو دراصل ان پیغامات اور مواد کی اقسام کا تعین کرتا ہے جو رابطہ کے دونوں سروں پر موجود کارگزار (applications) یعنی سوفٹ ویئر سمجھتے ہیں۔

دستور شبکی حزمہ میں چند انتہائی کثرت سے استعمال کیے جانے والے نفاذی دستورں میں، نظام اسم ساحہ، POP3، IMAP، SMTP، HTTPS، HTTPS اور فائل منتقلی پروٹوکول شامل ہیں۔ ان سب کی تفصیل کے لیے اور مزید دستوروں کے لیے ان کے مخصوص صفحات اور ان صفحات میں دی گئی فہرست دیکھیے۔ کچھ دستور ایسے بھی ہیں جو مندرجہ بالا IETF کے طریقہ کار سے نہیں بنے بلکہ ان کی ابتدا کسی نجی یا کاروباری ادارے کے تجرباتی نظام کی صورت میں ہوئی۔ جو بعد میں وسیع پیمانے پر استعمال ہونے لگے اور اپنی ایک مستقل حیثیت اختیار کر گئے۔ ان کی مثالیں IRC اور دیگر انسٹینٹ میسیجنگ و ھمتا بہ ھمتا اشتراک ملف (peer-to-peer file sharing) ہیں۔

جالِبین کی ساخت

انٹرنیٹ اور اس کی ساخت کی تجزیہ کاری کئی انداز میں کی جاتی رہی ہے۔ مثال کے طور پر، یہ تجزیہ کیا گیا ہے کہ انٹرنیٹ IP راؤٹنگ کی ترکیب اورورلڈ وائڈ ویب کے ہائپرٹیکسٹ لنکس دراصل اسکیل فری نیٹ ورکس ہیں۔ کاروباری شبکے، انٹرنیٹ ایکسچینج پوائنٹس کے ذریعہ مربوط ہوتے ہیں اور تحقیقی و علمی شراکوں میں بڑے ذیلی شراکوں کے ساتھ مربوط ہونے کا رجحان پایا جاتا ہے۔ مثلا

شبکی جمیعت برائے متعین اسم و اعداد

ورلڈ وائڈ ویب (World Wide Web)

باب:انٹرنیٹ/box-header لوا خطا ماڈیول:Random_slideshow میں 86 سطر پر: attempt to call field 'getContent' (a nil value)۔

باب:انٹرنیٹ/box-header باب:انٹرنیٹ/انٹرنیٹ news

باب:انٹرنیٹ/box-header باب:انٹرنیٹ/WikiProjects

باب:انٹرنیٹ/box-header باب:انٹرنیٹ/Did you know/5

باب:انٹرنیٹ/box-header باب:انٹرنیٹ/Categories

باب:انٹرنیٹ/box-header باب:انٹرنیٹ/Features

باب:انٹرنیٹ/box-header باب:انٹرنیٹ/Things you can do

باب:انٹرنیٹ/box-header باب:انٹرنیٹ/Topics

باب:انٹرنیٹ/box-header باب:انٹرنیٹ/Related portals

باب:انٹرنیٹ/box-header

انٹرنیٹ  ویکی کتب  انٹرنیٹ ویکی العام انٹرنیٹ  ویکی اخبار  انٹرنیٹ  ویکی اقتباسات  انٹرنیٹ  ویکی ماخذ  انٹرنیٹ  ویکی جامعہ  انٹرنیٹ  ویکی لغت  انٹرنیٹ  ویکی ڈیٹا 
ویکی کتب العام ویکی اخبار ویکی اقتباسات ویکی ماخذ ویکی جامعہ ویکی لغت ویکی ڈیٹا

باب:انٹرنیٹ/box-header باب:انٹرنیٹ/Wikipedia's portals