ترک زبانیں (Turkic languages) ترک قوم کی طرف سے بولی جانے والی کم از کم پینتیس زبانوں کا لسانی خاندان ہے۔[2] یہ جنوب مشرقی یورپ، بحیرہ روم، سائبیریا اور مغربی چین میں بولی جاتی ہے۔ اسے متنازع الطائی زبان خاندان کا حصہ بنانے کی تجویز ہے۔[3][4]

ترک
Turkic
جغرافیائی
تقسیم:
جنوب مشرقی یورپ تا مغربی چین اور سائبیریا
لسانی درجہ بندی: دنیا کی بنیادی لسانی خاندان میں سے ایک
سابقہ اصل-زبان: Proto-Turkic
ذیلی تقسیمات:
آیزو 639-5: trk
گلوٹولاگ: turk1311[1]
{{{mapalt}}}
ترک زبانوں کا جغرافیائی پھیلاؤ
  جنوب مغربی (اوغوز)
  جنوب مشرقی (اوئغور)
  خلج (ارغو)
  شمال مغربی (کپچاک)
   چوواش (اوغور)
  شمال مشرقی (سائبیریائی)

درجہ بندیترميم

 
ترک زبانوں کا جغرافیائی پھیلاؤ کا نقشہ

ترک زبانوں کو چھ شاخوں میں تقسیم کر سکتے ہیں۔[5]

حوالہ جاتترميم

  1. ہیمر اسٹورم، ہرالڈ؛ فورکل، رابرٹ؛ ہاسپلمتھ، مارٹن (مدیران۔)۔ "ترک"۔ گلوٹولاگ 3.0۔ یئنا، جرمنی: میکس پلانک انسٹی ٹیوٹ فار دی سائنس آف ہیومین ہسٹری۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  2. Dybo A.V., "Chronology of Türkic languages and linguistic contacts of early Türks", Moskow, 2007, p. 766, [1] (In Russian)
  3. Gordon, Raymond G., Jr. (ed.)۔ "Ethnologue: Languages of the World, Fifteenth edition. Language Family Trees – Altaic"۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2007-03-18۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)CS1 maint: multiple names: authors list (link) CS1 maint: extra text: authors list (link)
  4. Katzner، Kenneth۔ Languages of the World, Third Edition۔ Routledge, an imprint of Taylor & Francis Books Ltd.۔ ISBN 978-0-415-25004-7۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  5. Lars Johanson, The History of Turkic. In Lars Johanson & Éva Ágnes Csató (eds), The Turkic Languages, London, New York: Routledge, 81-125, 1998.Classification of Turkic languages

بیرونی روابطترميم