جعدہ بن ہبیرہ بن ابی وہب قرشی مخزومی تابعی ہیں، علی بن ابی طالب کے بھانجے اور حسن و حسین کے پھوپی زاد بھائی ہیں۔ان کی والدہ ام ہانی بنت ابی طالب ہیں۔[1] رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے زمانے میں ولادت ہوئی لیکن صحبت نہ مل سکی۔[2]

جعدہ بن ہبیرہ مخزومی
 

معلومات شخصیت
والد ہبیرہ بن ابی وہب  ویکی ڈیٹا پر (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والدہ ام ہانی بنت ابی طالب  ویکی ڈیٹا پر (P25) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

نسب ترمیم

ولدیت: جعدہ بن ہبیرہ بن ابی وہب بن عمرو بن عائذ بن عمران بن مخزوم۔[3] والدہ: ام ہانی بنت ابی طالب بن عبد المطلب بن ہاشم بن عبد مناف بن قصی۔[3]

زندگی ترمیم

عسقلانی، بغوی اور ابن سکن نے لکھا ہے کہ: جعدہ کی ولادت رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے عہد میں ہوئی،[2] ان کی والدہ ام ہانی بنت ابی طالب تھیں جو علی بن ابی طالب کی بہن تھیں۔ شیخ طوسی نے ان کا شمار اصحاب رسول میں کیا ہے۔[4] ابن مندہ نے لکھا ہے: «ان کی صحابیت میں اختلاف ہے»۔ بخاری نے لکھا ہے:«صحابیت ثابت ہے»۔ حاکم نیشاپوری نے اپنی تاریخ میں لکھا ہے: «کہا جاتا ہے کہ ان کی رویت (رسول صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کو دیکھنا) ثابت ہے»۔ ابن حبان کہتے ہیں: «مجھے ان کی صحابیت کے متعلق کوئی قابل اعتماد صحیح بات معلوم نہیں ہے»۔[2] جعدہ خراسان میں علی بن ابی طالب کے والی تھے، ان کی وفات معاویہ بن ابو سفیان کے زمانے میں ہوئی۔

حوالہ جات ترمیم