جس مستحق شخص کے پاس نعمت ہو اس سے نعمت کے زوال کو حسد کہتے ہیں۔[1]

دوسرے کی اچھی قسمت کی وجہ سے پہنچے والی تکلیف کو حسد کہتے ہیں۔باالفاظ دیگر اللہ تعالیٰ کی تقسیم سے اختلاف رکھنا حسد کہلاتا ہے۔ [2]

صاحب نعمت کے پاس نعمت دیکھ کر یہ تمنا کرنا کہ اس کے پاس یہ نعمت رہے اور ہمیں بھی اس کی مثل مل جائے یہ رشک ہے۔

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم

  1. المفردات فی غریب القرآن جلد 10، علامہ راغب اصفہانی ص118، مطبوعہ المکتبۃ المرتضویہ، ایران، 1342ھ
  2. حسد کیا ہے