مرکزی مینیو کھولیں

دنیا کی قدیم ترین تاریخ

دنیا کی قدیم ترین تاریخ یا تاریخ ہیروڈوٹس (یونانی: Ἱστορίαι) مغرب کی کتب تواریخ میں قدیم ترین تاریخ سمجھی جاتی ہے[1] جسے ہیروڈوٹس نے یونانی زبان کے آیونی لہجہ میں 450 ق م اور 420 ق م کے درمیان قلم بند کیا۔ اپنی قدامت کی بنا پر یہ تاریخ بحیرہ روم اور مغربی ایشیا میں اس وقت موجود ثقافتوں، روایتوں، جغرافیہ اور سیاسی نزاعات وغیرہ کے متعلق معلومات کا معتبر ماخذ سمجھی جاتی ہے۔ اس کتاب کی مدد سے بالخصوص ہخامنشی سلطنت کا قیام و عروج اور پانچویں صدی ق م میں ہخامنشیوں اور یونانی شہروں کے مابین ہونے والی جنگوں کے واقعات کی مستند معلومات ملتی ہیں۔

دنیا کی قدیم ترین تاریخ
تاریخ ہیروڈوٹس.jpg
مصنف ہیروڈوٹس
مترجم یاسر جواد
ملک یونان
زبان قدیم یونانی
صنف تاریخ
ناشر نگارشات
تاریخ اشاعت
440 ق م

علاوہ ازیں اس کتاب میں سندھ اور پنجاب سے لے کر یونان تک پھیلے ہوئے ممالک، فارس اور یونان کی تہذیبی اور سیاسی روایتوں، قدیم یورپ اور ایشیا کے ثقافتی اور مذہبی رسم و رواج، مُردوں کو حنوط کرنے کے مصری طریقوں، ان کے بادشاہوں، رانیوں، جنگوں اور حکومتوں کے متعلق بیش بہا معلومات درج ہیں۔ اس اہم تاریخ کا اردو ترجمہ اردو کے معروف مترجم یاسر جواد نے کیا ہے اور ساتھ ہی انہوں نے دو ہزار سے زائد وضاحتی حواشی بھی شامل کتاب کیے ہیں۔ ہیروڈوٹس نے اس کتاب کو نو ابواب میں تقسیم کیا ہے اور ان سب کے نام علوم و فنون کی 9 دیویوں کے ناموں پر رکھے ہیں۔

حوالہ جاتترميم

  1. Arnold, John H. (2000). History: A Very Short Introduction. Oxford University Press. 17. ISBN 0-19-285352-X.

بیرونی روابطترميم