راکھ کا بدھ (انگریزی: Ash Wednesday) مغربی مسیحیت میں لینٹ کا پہلا دن ہوتا ہے۔ اسے راکھ کا اتوار اس لیے کہا جاتا ہے کہ کیونکہ قدیم کلیسیا میں دستور تھا، اور یہ دستور رومی کلیسیا میں بھی قائم ہے کہ اس دن وہ راکھ جس پر برکت دی جاچکی ہوتی، عبادت کرنے والوں کے ماتھے پر لگاتے تھے۔ یہ راکھ کھجور کی ان ڈالیوں کو جلا کر حاصل کی جاتی تھی جو کھجور کے اتوار کو عبادت کرنے والے جلوس کی شکل میں گرجا گھر میں لائے تھے۔

راکھ کا بدھ
Crossofashes.jpg
ایک عبادت گزار کے ماتھے پر لگی صلیب کی شکل کی راکھ
منانے والےکئی مغربی مسیحی
قسمعالم مسیحیت
رسوماتماس مقدس، کلیسیائی خدمت گزاری، ربانی خدمت گزاری، عبادت الٰہی
ماتھے پر راکھ لگانا
تاریخایسٹر سے پہلے ساتویں ہفتے میں بدھ کے روز
2019ء  تاریخمارچ 6
2020ء  تاریخفروری 26
2021 تاریخفروری 17
2022 تاریخمارچ 2
تکرارسالانہ
منسلکیوم استغفار/مارڈی گرا
کارنیوال
لینٹ
ایسٹر

ساتویں صدی عیسوی میں اس دن کو روزوں (لینٹ) کا پہلا دن مقرر کیا گیا اور راکھ ملنے کی رسم آٹھویں صدی عیسوی میں شروع ہوئی۔ پروٹسٹنٹ کلیسیا کے مصلحینِ دین نے اسے سولہویں صدی میں بدعت قرار دے کر بند کر دیا۔

خاک اور راکھ ملنے کی رسم کا مطلب پرانے عہد نامے کے حوالوں سے ظاہر ہوتا ہے[1][2][3] جہاں یہ غم اور توبہ کا علامتی نشان ہے۔

حوالہ جاتترميم

  1. 2 سموئیل باب 13 آیت 29ّ
  2. ایوب باب 2 آیت 8
  3. یرمیاہ باب 6 آیت 26