رکن الدین فیروز

سلطنت دہلی کا چوتھا مسلم حکمران جس نے 30 اپریل 1236ء سے 20 نومبر 1236ء تک حکومت کی۔

رکن الدین فیروز (وفات: 20 نومبر 1236ء) سلطنت دہلی کے خاندان غلاماں کا چوتھا بادشاہ تھا جس نے صرف 7 ماہ حکومت کی۔ وہ شمس الدین التمش (1211ء تا 1236ء) کا بیٹا تھا۔ اپریل 1236ء میں التمش کے انتقال کے بعد وہ تخت پر بیٹھا لیکن اسے تخت کے لائق نہیں سمجھا جاتا تھا اس لیے نومبر 1236ء میں مارا گیا۔ التمش کی بیٹی رضیہ سلطان نے اس کے بعد اقتدار سنبھالا۔

رکن الدین فیروز
Rukn al-Din Firoz (3).jpg
 

معلومات شخصیت
وفات 20 نومبر 1236  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
سلطنت دہلی  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والد التتمش  ویکی ڈیٹا پر (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والدہ شاہ ترکان  ویکی ڈیٹا پر (P25) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
خاندان خاندان غلاماں  ویکی ڈیٹا پر (P53) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مناصب
سلطان سلطنت دہلی   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
برسر عہدہ
30 اپریل 1236  – 20 نومبر 1236 
Fleche-defaut-droite-gris-32.png التتمش 
رضیہ سلطانہ  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png

شمس الدین التمش کی بیٹی کا نام عام طور پر لوگ عورت ہونے کی وجہ سے رضیہ سلطانہ لکھتے ہیں اور یہ غلطی بہت پڑھے لکھے ہوگ کرتے ہیں واضح رہے کہ شمس الدین التمش نے اپنے دونوں بیٹوں کی کثرت شراب نوشی اور عادات بد کے باعث اپنی بیٹی رضیہ کو ولی عہد کے طور پر منتخب کیا جب رضیہ نے حکومت کی باگ ڈور سنبھالی تو اس نے اپنے لیے سلطان کا لقب پسند و اختیار کیا اسی لیے رضیہ کو رضیہ سلطان کہا جاتا ہے۔ تاریخ فرشتہ کے مصنف نے اپنے فارسی مسودے میں بھی رضیہ سلطان کا لفظ ہی استعمال کیا ہے۔

ماقبل 
شمس الدين التتمش
خاندان غلاماں
1206ء1290ء
مابعد 
رضیہ سلطانہ
ماقبل 
شمس الدين التتمش
سلطان دہلی
30 اپریل 1236ء20 نومبر 1236ء
مابعد 
رضیہ سلطانہ