”رگ“ نظم کے بندھ کو کہتے ہیں جو کسی کی تعریف میں لکھا گیا ہو اور وید کے معنی علم کے ہیں، رگ وید اگنی دیوتا کی تعریف سے شروع ہوتا ہے، یہ ہندوؤں کے اہم ترین اور قدیم ترین تہذیبی افکار کا مجموعہ ہے اس میں مختلف مظاہر فطرت کی تعلیم بھی شامل ہے۔ بلکہ یہ کہنا زیادہ بہتر ہوگا کہ ہندوستانی تہذیب کی پوری عمارت ویدوں کی تعلیم پر قائم ہے اور ویدوں میں سب سے زیادہ اہمیت رگ وید کو حاصل ہے۔ اس لیے ہندومت کے بنیادی اصولوں کو معلوم کرنے کے لیے اس کا مطالعہ ضروری ہے، اندر، اگنی، ورن جیسے دیوتاؤں کی تعریف سے یہ وید بھرا ہوا ہے، رگ وید بہت سے مبہم سوالوں کے حل میں مدد دیتا ہے اسی کو بنیاد بنا کر دی ہندو اسپیکس کے رائٹر نے کہا:

Rigveda
اگر انسان صحیح طور پر انسان بن جائے اور چار احکامات پر عمل کرے، ماں کی خدمت، باپ کی عزت، روحانی معلم کی اطاعت اور مہمان کی قدر و منزلت تو یقیناً خدا کو دیکھ سکتا“۔[1]

حوالہ جاتترميم

  1. Rav, N. “The Hindu speaks” p. 27, Kasutri and sons Channa, India, 1999