شعیب ہاشمی ، (12 جولائی 1938 - 15 مئی 2023)، ایک پاکستانی ڈراما نگار، اداکار اور ماہر تعلیم تھے۔ [1]پاکستان میں ٹیلی ویژن کے ابتدائی دور میں شعیب ہاشمی کے پروگرام زبردست مقبول ہوئے، وہ مشہور ٹی وی پروگرامز اکڑبکڑ، سچ گپ، ٹال مٹول اور باؤ ٹرین کے خالق تھے۔[2]

شعیب ہاشمی
معلومات شخصیت
تاریخ وفات سنہ 2023ء  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
زوجہ سلیمہ ہاشمی‎  ویکی ڈیٹا پر (P26) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بہن/بھائی
حمير هاشمى  ویکی ڈیٹا پر (P3373) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور
رائل اکیڈمی آف ڈرامیٹک آرٹ
لندن اسکول آف اکنامکس اینڈ پولیٹیکل سائنس  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ اداکار،  ڈراما نگار،  ٹیلی ویژن اداکار  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات

کیریئر ترمیم

ہاشمی نے گورنمنٹ کالج (اب گورنمنٹ کالج یونیورسٹی ) لاہور سے معاشیات میں ماسٹر آف آرٹس کی ڈگری حاصل کی اور ایم ایس سی کی ڈگری لندن سکول آف اکنامکس (LSE) سے حاصل کی۔ [1] انھوں نے رائل اکیڈمی آف ڈرامیٹک آرٹس ، لندن سے تھیٹر کی تعلیم بھی حاصل کی۔ ہاشمی نے کئی سالوں تک گورنمنٹ کالج (اب گورنمنٹ کالج یونیورسٹی ) لاہور میں معاشیات پڑھائی اور بعد میں لاہور اسکول آف اکنامکس میں پڑھایا۔[3][4]

ان کے خیر خواہوں میں ارشد محمود (موسیقار) ، ایک پاکستانی میوزک کمپوزر اور اداکار تھے جو 1969ء میں ہاشمی کے طالب علم تھے۔ ارشد محمود نے ایک بڑے اخبار کو انٹرویو دیتے ہوئے شعیب ہاشمی کے بارے میں تبصرہ کرتے ہوئے کہا، ’’تھوڑے الفاظ کا آدمی، ہاشمی شائستہ، بردبار اور رحم دل تھا۔ میں اکثر ان کے دوستوں اور طلبہ سے ملتا ہوں اور وہ سب اس سے محبت کرتے ہیں۔ وہ بنیادی طور پر ایک فنکار اور انسان دوست ہیں۔ شاعری اور موسیقی ان کے پسندیدہ موضوع بحث ہیں۔" [1][5]

ذاتی زندگی ترمیم

ہاشمی کی شادی پاکستان کے نامور شاعر فیض احمد فیض کی بیٹی سلیمہ ہاشمی سے ہوئی تھی۔ جوڑے کے دو بچے تھے۔[1][6]

وفات ترمیم

ہاشمی کا انتقال 15 مئی 2023ء کو 84 سال کی عمر میں ہوا۔ اپنی موت تک وہ بیمار اور فالج کا شکار تھے، اورانہیں چلنے پھرنے اور بات کرنے میں دشواری کا سامنا تھا۔ وہ لاہور میں زیر علاج رہے۔[7]

کام ترمیم

ٹیلی ویژن ترمیم

انھوں نے پاکستان ٹیلی ویژن (PTV) کے لیے مندرجہ ذیل مزاحیہ ٹی وی سیریل لکھے، جو اصل میں 1970ء کی دہائی میں نشر ہوئے۔[8][9]

  • اذکار بکر (1970 کی دہائی کا مزاحیہ شو جو بچوں کی تعلیم کے لیے بنایا گیا تھا) [10]
  • سچ گپ (1970 کا کامیڈی شو) [10]
  • تال متول (1970 کا کامیڈی شو) [10]
  • بلیلا - نشر ہونے کے فوراً بعد پابندی لگا دی گئی۔ [1]

اخباری کالم ترمیم

ایوارڈز ترمیم

حوالہ جات ترمیم

  1. ^ ا ب پ ت ٹ ث ج 'Humor's prodigy' Profile of Shoaib Hashmi on Dawn (newspaper) Published 22 January 2012, Retrieved 16 December 2018
  2. "معروف اداکار، دانشور ، ڈرامہ نگار اور پروفیسر شعیب ہاشمی انتقال کرگئے"۔ العربیہ اردو۔ 2023-05-15۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 مئی 2023 
  3. Images Staff (2023-05-15)۔ "Veteran playwright Shoaib Hashmi passes away"۔ Images (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 مئی 2023 
  4. "معروف دانشور اور فیض احمد فیض کے داماد شعیب ہاشمی انتقال کرگئے"۔ urdu.geo.tv (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 مئی 2023 
  5. "شعیب ہاشمی جہاں بیٹھ جاتے تھے وہ کونہ جگمگا اٹھتا: بشریٰ انصاری"۔ Independent Urdu۔ 2023-05-15۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 مئی 2023 
  6. Sohail Iqbal۔ "معروف ڈرامہ نگار شعیب ہاشمی انتقال کرگئے - SUNO NEWS HD" (بزبان انگریزی)۔ 15 مئی 2023 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 مئی 2023 
  7. "Veteran playwright, academic Shoaib Hashmi passes away"۔ Dunya News (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 مئی 2023 
  8. Minute Mirror Special (2023-05-15)۔ "Playwright, satirist Shoaib Hashmi passes away"۔ Minute Mirror (بزبان انگریزی)۔ 15 مئی 2023 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 مئی 2023 
  9. "معروف اداکار و ڈرامہ نویس شعیب ہاشمی انتقال کر گئے"۔ 24 News Digital Urdu۔ 2023-05-15۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 مئی 2023 
  10. ^ ا ب پ 'The story behind the loss of PTV 's precious archives' Dawn (newspaper), Published 15 August 2014, Retrieved 16 December 2018
  11. BR Life & Style (2023-05-15)۔ "Renowned playwright and actor Shoaib Hashmi passes away"۔ Brecorder (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 مئی 2023