شیخ محمد بن علی باعلوی

سیّد محمد بن علی باعَلَوی فقہی مہارت کی وجہ سے فقیہِ مُقدّم سے شہرت رکھتے ہیں

محمد بن علی باعلوی
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1178  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تریم، یمن  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات سنہ 1232 (53–54 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تریم، یمن  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مدفن قبرستان زنبل
رہائش تریم، یمن  ویکی ڈیٹا پر (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
لقب فقيه المقدم
استاذ الاعظم
مقدم التربة
مذہب اسلام
فرقہ شافعي
رشتے دار عبد الملك باعلوي (ابن عم)
خاندان باعلویہ
عملی زندگی
پیشہ فقیہ  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجۂ شہرت بانی سلسلہ باعلویہ
مؤثر شعيب أبو مدين

ولادتترميم

شیخ محمد بن علی باعلوی کی ولادت 574ھ کو تریم حضرموت یمن میں ہوئی

نسبترميم

محمد بن علي بن محمد صاحب مرباط بن علي خالع قسم بن علوي بن محمد بن علوي بن عبيد الله بن أحمد المهاجر بن عيسى بن محمد النقيب بن علي العريضي بن جعفر الصادق بن محمد الباقر بن علي زين العابدين بن الحسين السبط بن علي بن أبي طالب، وعلي زوج فاطمة بنت محمد صلى الله عليه وسلم.

القابترميم

الفقيه المقدم، الاستاذ الاعظم اور مقدم التربة ان کے القابات تھے۔

بانی سلسلہترميم

آپ جید عالمِ دین، محدثِ وقت، فقیہِ شافعی، استاذُالعلماء، خاندانِ آلِ باعلوی کی مؤثر شخصیت اور سلسلہ باعلویہ کے بانی ہیں۔

وفاتترميم

تریم یمن 29ذوالحجہ 653ھ کو وصال فرمایا، مزار مبارک زنبل قبرستان میں ہے۔[1]

  1. الاعلام، خير الدين الزركلي دار العلم للملايين بيروت، لبنان