عباس بن عبادہ بن نضلۃ الانصاری شہدائے غزوہ احد میں شامل صحابی ہیں۔

عباس بن عبادہ
معلومات شخصیت

نام و نسبترميم

عباس بن عبادہ بن نضلہ بن مالک بن عجلان بن زید بن غنم سالم بن عوف بن عمرو بن عوف بن خزرج۔

اسلامترميم

آپ ان لوگوں میں سے ہیں۔ جنہیں بیعت عقبہ ثانیہ میں حاضر ہو کر رسولِ اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے ہاتھ مبارک میں ہاتھ دے کر بیعت کرنے کا شرف حاصل ہوا۔ ابن اسحاق کی روایت کے مطابق آپ بیعت عقبہ اولیٰ اور ثانیہ دونوں میں شریک تھے۔اور بعض اہل علم نے لکھا ہے۔ کہ آپ انصار کے ان چھ خوش نصیب اور ممتاز افراد میں سے ہیں جنھوں نے مکہ مکرمہ جاکر رسول اللہ ﷺ سے ملاقات کر کے اسلام قبول کیا تھا۔ قبول اسلام کے بعد آپ وہیں رسول اکرم ﷺ کے ہمراہ مکہ مکرمہ میں ہی مقیم رہے حتی کہ رسولِ اکرم ﷺ کی ہجرت مدینہ کے بعد آپ مدینہ منورہ آئے۔ اس لیے آپ کو مہاجر و انصاری کہا جاتا ہے۔ ہجرت کے بعد رسول مکرم ﷺ نے آپ کے اور عثمان بن مظعون کے مابین مواخات کرائی تھی۔

غزواتترميم

آپ غزوۂ بدر میں شریک نہیں ہو سکے تھے۔البتہ غزوۂ احد میں شریک ہوئے اور جامِ شہادت نوش فرما کر شہادت ےکے مرتبہ علیا پر فائز ہوئے۔۔[1]

وفاتترميم

غزوۂ احد میں شریک ہوئے اور لڑکر شہادت پائی۔

اخلاقترميم

جوش ایمان اور حب رسول کا نظارہ بیعت عقبہ میں بخوبی ہوچکا ہے۔

حوالہ جاتترميم

  1. اسد الغابہ جلد 2صفحہ 184حصہ پنجم مؤلف: ابو الحسن عز الدين ابن الاثير ،ناشر: المیزان ناشران و تاجران کتب لاہور