میر عبد الکریم بخاری ( فارسی: مير عبد الكريم بخارى‎ دوسرا نصف۔ XVIII صدی ، بخارا - 1830 ، قسطنطنیہ ) - فارسی مورخ اور سیاح ۔

عبدالکریم بخاری
معلومات شخصیت
مقام پیدائش بخارا  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات سنہ 1830[1]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
قسطنطنیہ  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ مؤرخ،  مہم جو  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان ترک[2]  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل تاریخ  ویکی ڈیٹا پر (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

عبد الکریم بخاری کا تعلق بخارا سیدوں سے تھا ، میر الدین (1804) ماتحت معیشت کا سربراہ تھا۔ 1806 میں انہوں نے اپنا وطن چھوڑ دیا اور سفارت خانے کے وفد کے حصے کے طور پر قسطنطنیہ گئے۔ 1817 میں ، اس نے احمد شاہ درانی کے زمانے کے تاریخی واقعات کو بیان کرتے ہوئے وسطی ایشیاء کا ایک مختصر تاریخی اور جغرافیائی جائزہ لکھا۔ 1873-1874 میں ، فارسی زبان میں یہ کتاب مصر میں شائع ہوئی۔ 1876 میں ، "وسطی ایشیا کی تاریخ (افغانستان ، بخارا ، خیوا ، کوکند)" کے عنوان سے فرانسیسی زبان میں ایک ترجمہ شائع ہوا فرانسیسی: Histoire de l'Asie centrale (Afghanistan, Boukhara, Khiva, Khoquand) ہسٹوائر ڈی ایل ایسی سنٹرال (افغانستان ، بخارا ، خیوہ ، خوکند) ) ۔

نوٹترميم

  1. Vatican Library VcBA ID: https://wikidata-externalid-url.toolforge.org/?p=8034&url_prefix=https://opac.vatlib.it/auth/detail/&id=495/13867 — بنام: 'Abd al-Karim al-Buhari
  2. Identifiants et Référentiels — اخذ شدہ بتاریخ: 9 مئی 2020

ادبترميم

  • Мир Абдул-Карим Бухари. История Центральной Азии (Афганистан, Бухара, Хива, Коканд) = افغان وكابل وبخارا وخيوق وخوقند خانلرينك احوال. — 1873.

При написании этой статьи использовался материал из издания «Казахстан. Национальная энциклопедия» (1998—2007), предоставленного редакцией «Қазақ энциклопедиясы» по лицензии Creative Commons BY-SA 3.0 Unported.