غلوہ فاصلے کے تعین کا پیمانہ و معیار ہے۔

لغوی معنیترميم

تیر کو انتہائی دور تک پھینکنے کو غلوہ کہتے ہیں اس کی جمع غلوات ہے[1]

اصطلاحی معنیترميم

یہ 300 سے 400 ذراع کی مقدار کے برابر فاصلے کے لیے استعمال ہوتا ہے یہ فرسخ کا پچیسواں حصہ ہے

پیمائشترميم

اس میں اختلاف ہے بعض کے نزدیک300 ذراع بعض کے ہاں تین سو سے چار خطوہ(قدم) ایک قول یہ ہے کہ ایک بار تیر پھینکنے کا فاصلہ۔

شرعی استعمالترميم

فقہا کے ہاں براہ راست استعمال نہیں البتہ فاصلے کے تعین میں معیار قرار دیتے ہیں تیمم کے جائز ہونے کے لیے ایک غلوہ تلاش کرنا فرض ہے مسافر ہونے کے لیے آبادی سے دور ہونے میں اس کا ذکر ملتا ہے[2]

حوالہ جاتترميم

  1. القاموس المحیط
  2. موسوعہ فقہیہ ،جلد38 صفحہ 340، وزارت اوقاف کویت، اسلامک فقہ اکیڈمی انڈیا