لیری سینگر (انگریزی: Larry Sanger) (ولادت 16 جولائی 1968ء)[1][2] امریکی انٹرنیٹ پراجیکٹ ڈولپر ہیں اور ویکیپیڈیا کے مشترک بانی ہیں۔ وہ سٹی زینڈیم کے بھی بانی ہیں۔[3][4] ان کا بچپن اینکرایج، الاسکا میں گذرا۔[5] زندگی کے ابتدائی ایام سے ہی ان کو فلسفہ میں دلچسپی تھی۔[6] انھوں نے ریڈ کالج سے 1991ء میں فلسفہ میں بی اے کیا اور اوہائیو اسٹیٹ یونیورسٹی سے 2000ء میں فلسفہ میں ہی ڈکٹریٹ کی ڈگری حاصل کی۔[7] ان کا زیادہ تر فلسفیانہ کام علم (جانکاری، نالج) کی تھیوری علمیات پر مشتمل ہے۔[8]

لیری سینگر
(ہسپانوی میں: Larry Sanger ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Sanger in جولائی 2006

معلومات شخصیت
پیدائشی نام (انگریزی میں: Lawrence Mark Sanger ویکی ڈیٹا پر (P1477) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیدائش (1968-07-16) جولائی 16, 1968 (عمر 55 برس)
بلویو، واشنگٹن، U.S.
رہائش کولمبس، اوہائیو، U.S.
شہریت ریاستہائے متحدہ امریکا   ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
تعليم Reed College (BA)
اوہائیو اسٹیٹ یونیورسٹی (MA، علامۂِ فلسفہ)
مادر علمی اوہائیو اسٹیٹ یونیورسٹی   ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تعلیمی اسناد پی ایچ ڈی   ویکی ڈیٹا پر (P512) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ Internet project developer
پیشہ ورانہ زبان انگریزی   ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل فلسفہ   ویکی ڈیٹا پر (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ملازمت نیو پیڈیا ،  اوہائیو اسٹیٹ یونیورسٹی   ویکی ڈیٹا پر (P108) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ شہرت Co-founding Wikipedia
کارہائے نمایاں ویکیپیڈیا   ویکی ڈیٹا پر (P800) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ویب سائٹ
ویب سائٹ LarrySanger.org
IMDB پر صفحات  ویکی ڈیٹا پر (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

انھوں نے متعدد د آن لائن ائرۃ المعارف پر کام کیا ہے۔[9] وہ نیو پیڈیا کے سابق ایڈیٹر ین چیف ہیں،[10] نیوپیڈیا کی جانشین ویکیپیڈیا کے چیف آرگنائزر (2001-02ء) رہے ہیں اور سٹی زینڈیم کے بانی اور ایڈیٹر ان چیف رہ چکے ہیں۔[11]نیوپیڈیا میں اپنے عہدہ پر رہتے ہوئے انھوں نے مضمون کی ترقی (article development.) کے لیے کمر کس لی۔[12] انھوں نے ایک ویکی کے نفاذ کا منصوبہ بنایا جہاں سے ان کے لیے ویکیپیڈیا کی راہ ہموار ہوئی۔[13] ابتدا میں ویکیپیڈیا نیوپیڈیا کا تتمہ مانا جاتا تھا۔و131 وہ ویکیپیڈیا کے ابتدائی کمیونٹی لیڈر تھے۔[14] اور اس کی متعدد بنیادی پالیسیاں انھوں نے ہی بنائی ہیں۔[15] سانگیر نے 2002ء میں ویکیپیڈیا کو خیر آباد کہ دیا اور تب سے ہی یہ پراجیکٹ حالات سے دو چار رہا ہے۔[16][17] ان کا کہنا ہے کہ کئی وجوہات کی بنا پر ویکیپیڈیا اب بے اعتبار ہو چلا ہے ان میں ماہر افراد کے عزت میں کمی ہے۔[18] اکتوبر 2006ء میں انھوں نے ویکیپیڈیا کی طرح ایک ویب گاہ سٹی زینڈم کی بنیاد رکھی۔[19] اکتوبر 2017ء میں یہ اطلاع ملی کہ سانگیر چیف انفارمیشن آفیسر کی چیثیت سے ایوریپیڈیا سے جڑ گئے ہیں۔[20] سانگیر نے اوہایو اسٹیٹ یونیورسٹی میں فلسفہ پڑھایا ہے۔[21] اور انسائکلو آف ارتھ کے ابتدائی حکملت عملی بنانے والوں میں سے ہیں۔[22] انھوں نے واچ ناو ارتھ کے بینر تلے ترقی پزیر تعلیمی پراجیکٹ برائے افراد کے لیے کام کیا ہے۔[23] انھوں نے ویب پر مبنی مطالعہ پروگرام ڈیزائن کیا ہے جس کا نام ریڈنگ بیر ہے جس کا مقصد بچوں کو طریقہ مطالعہ سے اگاہ کرنا ہے۔[24] فروری 2013ء میں انھوں نے انفو بٹ کے نام سے ایک خبر کے مصادر کا آغاز کیا۔[25] 2015ء کے وسط میں یہ مالی حالت سے دوچار ہوا اور مکمل طور پر لانچ ہونے سے قبل ہی عدم کا شکار ہوا۔[26][27]

حوالہ جات

ترمیم
  1. Jennifer Joline Anderson (2011)۔ Wikipedia: The Company and Its Founders (1 ایڈیشن)۔ Abdo Group۔ صفحہ: 20۔ ISBN 1-61714-812-1 
  2. Western History for Kids, Part 1 – ancient and medieval – Sanger Academy یوٹیوب پر، video taken from Sanger's official educational YouTube channel, pronunciation confirmed around 0:10, accessed مئی 7, 2016
  3. Nate Anderson (نومبر 21, 2007)۔ "Larry Sanger says "tipping point" approaching for expert-guided Citizendium wiki"۔ Ars Technica۔ اخذ شدہ بتاریخ نومبر 21, 2007 
  4. Mitch Nauffts (مارچ 27, 2007)۔ "5 Questions For.۔۔: Larry Sanger, Founder, Citizendium"۔ Philanthropy News Digest۔ Foundation Center۔ اخذ شدہ بتاریخ مارچ 27, 2007 
  5. Mitch Nauffts (مارچ 27, 2007)۔ "5 Questions For.۔۔: Larry Sanger, Founder, Citizendium"۔ Philanthropy News Digest۔ Foundation Center۔ اخذ شدہ بتاریخ مارچ 27, 2007 
  6. "The Wikipedia Competitor That's Harnessing Blockchain For Epistemological Supremacy"۔ Wired۔ دسمبر 6, 2017 
  7. "Some thoughts, 15 years after Wikipedia's launch" at LarrySanger.org. Quote: "We ran out of runway, as most startups do"
  8. "The Wikipedia Competitor That's Harnessing Blockchain For Epistemological Supremacy"۔ Wired۔ دسمبر 6, 2017 
  9. Chris Lydgate (جون 2010)۔ "Deconstructing Wikipedia"۔ Reed Magazine۔ 01 نومبر 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ نومبر 1, 2013 
  10. Mark Chillingworth (نومبر 27, 2006)۔ "Expert edition"۔ Information World Review۔ اکتوبر 16, 2008 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ مارچ 25, 2007 
  11. Wade Roush (جنوری 2005)۔ "Larry Sanger's Knowledge Free-for-All"۔ Technology Review۔ 14 مئی 2011 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ مارچ 25, 2007 
  12. Larry Sanger (اگست 30, 1995)۔ "Tutor-L: Higher education outside the universities"۔ scout.wisc.edu۔ اخذ شدہ بتاریخ مارچ 25, 2007 
  13. Larry Sanger (مارچ 22, 1994)۔ "Association for Systematic Philosophy"۔ George Mason University۔ اخذ شدہ بتاریخ مارچ 25, 2007 
  14. Marshall Poe (ستمبر 2006)۔ "The Hive"۔ The Atlantic Monthly۔ صفحہ: 2۔ اخذ شدہ بتاریخ مارچ 25, 2007 
  15. Larry Sanger۔ "Larry Sanger – Education"۔ larraysanger.org۔ اخذ شدہ بتاریخ مارچ 25, 2007 
  16. Larry Sanger (جون 2007)۔ "Education 2.0"۔ Egon Zehnder International۔ The Focus Online۔ 23 جون 2008 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ جون 1, 2007۔ The future of education could lie in a digital degree-granting institution that lives on the Internet. 
  17. Larry Sanger (2007)۔ "WHO SAYS WE KNOW: On the New Politics of Knowledge"۔ Edge Foundation, Inc.۔ 22 دسمبر 2012 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ نومبر 2, 2013 
  18. Andrew Keen (جون 2, 2008)۔ "Andrew Keen on New Media"۔ The Independent۔ London۔ 05 جون 2008 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ جون 8, 2008 
  19. Larry Sanger (اپریل 15, 2010)۔ "Individual Knowledge in the Internet Age"۔ Educause Review۔ اخذ شدہ بتاریخ نومبر 1, 2013 
  20. Liane Gouthro (مارچ 10, 2000)۔ "Building the world's biggest encyclopedia"۔ PCWorld۔ ستمبر 6, 2009 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ مارچ 25, 2007 
  21. "The Wikipedia Competitor That's Harnessing Blockchain For Epistemological Supremacy"۔ Wired۔ دسمبر 6, 2017 
  22. "Nupedia.com Editorial Policy Guidelines, Overview: Assignment"۔ Nupedia.com۔ May 2000۔ جون 7, 2001 میں اصل سے آرکائیو شدہ 
  23. Sam Williams (اپریل 27, 2004)۔ "Everyone is an editor"۔ Salon Media Group۔ صفحہ: 2۔ 05 ستمبر 2008 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ اپریل 15, 2009 
  24. Jonathan Sidener (دسمبر 6, 2004)۔ "Everyone's Encyclopedia"۔ The San Diego Union-Tribune۔ جنوری 14, 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ مارچ 25, 2007 
  25. Nate Anderson (نومبر 21, 2007)۔ "Larry Sanger says "tipping point" approaching for expert-guided Citizendium wiki"۔ Ars Technica۔ اخذ شدہ بتاریخ نومبر 21, 2007 
  26. Nate Lanxon (جون 5, 2008)۔ "The greatest defunct Web sites and dotcom disasters"۔ CNET۔ صفحہ: 5۔ اگست 22, 2008 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ فروری 27, 2009 
  27. Lindsay Betz (جون 1, 2007)۔ "Wikipedia formed by former Buckeye"۔ The Lantern۔ اوہائیو اسٹیٹ یونیورسٹی۔ جون 3, 2007 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ جون 1, 2007