منجح بن سہم شہدائے کربلا میں سے ہیں اور 10 محرم 61ھ کو لشکر عمرو بن سعد سے لڑتے ہوئے شہید ہوئے ۔

جماعت حسینی میں آزاد افراد کے ساتھ ساتھ غلاموں کی نمائندگی بھی کافی تھی.ان میں سب سے پہلے سلسلہ شہداء میں جن کا نام آتا ہے وہ منجح ہیں۔

شیخ الطائفہ نے کتاب الرجال میں انکا نام اصحابِ حسین علیہ السلام میں شمار کیا ہے.زمخشری نے ربیع الابرار میں لکھا ہے کہ حسینہ حضرت امام حسین علیہ السلام کی کنیز تھی جسے آپ (ع) نے نوفل بن حارث بن عبدالمطلب سے خرید فرمایا تھا اور اس کی شادی سہم سے کردی تھی.اس طرح منجح کی ولادت ھوئی اور چونکہ یہ کنیز علی بن الحسین علیھما السلام (زین العابدین) کے گھر میں خدمات انجام دیتی تھی اس لیے حضرت امام حسین علیہ السلام عراق کی طرف روانہ ھوئے تو وہ اپنے فرزند منجح سمیت آپ (ع) کے ھمراہ آئی.کربلا میں ان کی شہادت اوائل جنگ میں ہی واقع ھوئی اور وہ حسان بن بکر حنظلی کے ہاتھ سے قتل ھوئے.[1]


مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم