مھستی گنجوی

فارسی زبان کی شاعرہ

مھستی گَنجَوی (پیدائش: 1089ء— وفات: 1181ء) ایرانی خاتون شاعره تھیں۔ ان کا زمانه پانچویں اور چھٹی صدی ہجری کا ہے۔ وه عمر خیام کے بعد ایران کی برجستہ ترین رباعی گو شاعرہ سمجھی جاتی ہیں۔[5]

مھستی گنجوی
 

معلومات شخصیت
پیدائش 12 مئی 1089ء  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
گنجہ[1]  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات سنہ 1181ء (91–92 سال)[2][3]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
گنجہ  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ شاعرہ[4]،  معلمہ،  مصنفہ  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان فارسی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل شاعری  ویکی ڈیٹا پر (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

رباعیات ترمیم

دوشینه شبم بود شبیه یلداآن مونس غمگسار نآمد عمدا
شب تا به سحر ز دیده دُر می‌سفتممی‌گفتم" رب لاتذرنی فردا"

حواله جات ترمیم

  1. http://mehsati.blogfa.com/

حوالہ جات ترمیم

  1. ربط : https://d-nb.info/gnd/142467340  — اخذ شدہ بتاریخ: 13 دسمبر 2014 — اجازت نامہ: CC0
  2. ربط : https://d-nb.info/gnd/142467340  — اخذ شدہ بتاریخ: 2 مارچ 2015 — اجازت نامہ: CC0
  3. او ایل آئی ڈی: https://openlibrary.org/works/OL570317A?mode=all — بنام: Mahsatī Dabīr — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — مصنف: آرون سوارٹز
  4. https://cs.isabart.org/person/122076 — اخذ شدہ بتاریخ: 1 اپریل 2021
  5. محرابی، معین‌الدین، مهستی گنجه‌ای، بزرگترین زن شاعر رباعی‌سرا، 29