ٹوگو کی قومی فٹ بال ٹیم ، بین الاقوامی فٹ بال میں ٹوگو کی نمائندگی کرتی ہے اور اسے ٹوگولیس فٹ بال فیڈریشن کے زیر کنٹرول ہے۔ ٹوگو کی قومی فٹ بال ٹیم نے 2006 میں فیفا ورلڈ کپ میں اپنا آغاز کیا تھا۔ 2010 افریقہ کپ آف نیشنز سے قبل انگولا میں ان کی ٹیم کی بس پر مہلک حملہ ہوا تھا۔ وہ دستبردار ہو گئے اور بعد میں کنفیڈریشن آف افریقن فٹ بال کی طرف سے ان پر پابندی عائد کر دی گئی۔ 2013 میں تاریخ میں پہلی بار، ٹوگو افریقہ کپ آف نیشنز کے کوارٹر فائنل میں پہنچا۔ یہ ٹیم فیفا اور کنفیڈریشن آف افریقن فٹ بال دونوں کی نمائندگی کرتی ہے۔[3][4][5][6]ٹوگو نے 2006 میں اپنی تاریخ میں پہلی بار فیفا ورلڈ کپ میں شرکت کی۔

ٹوگو قومی فٹ بال ٹیم
شرٹ بیج/ایسوسی ایشن علامت
ایسوسی ایشنٹوگولیز فٹبال فیڈریشن
ذیلی کنفیڈریشنمشرقی افریقین فٹبال یونین
کنفیڈریشنکنفیڈریشن آف افریقن فٹبال
ہوم اسٹیڈیممختلف
فیفا رمزTOG
فیفا درجہ 123 Steady (20 دسمبر 2018)[1]
اعلی ترین فیفا درجہ46 (اگست 2006)
کم ترین فیفا درجہ133 (اپریل 2021)
ایلو درجہ 115 کم 4 (9 جنوری 2019)[2]
اعلی ترین ایلو درجہ56 (نومبر 2005, جنوری 2006)
کم ترین ایلع درجہ128 (4 ستمبر 1994)
اول رنگ
دوم رنگ
پہلا بین الاقوامی
فرانس کا پرچم French Togoland 1–1 Gold Coast and Trans-Volta Togoland 
(French Togoland; 13 October 1956)
سب سے بڑی جیت
 ٹوگو 6–0 Swaziland 
(Accra, Ghana; 11 November 2008)
 ٹوگو 6–0 موریشس 
(Lomé, Togo; 12 November 2017)
سب سے بڑی شکست
 مراکش 7–0 ٹوگو 
(Morocco; 28 October 1979)
 تونس 7–0 ٹوگو 
(Tunis, Tunisia; 7 January 2000)
عالمی کپ
ظہور1 (اول 2006)
بہترین نتائجGroup stage, 2006
Africa Cup of Nations
ظہور8 (اول 1972)
بہترین نتائجQuarter-finals, 2013

حوالہ جات ترمیم

  1. "The FIFA/Coca-Cola World Ranking"۔ FIFA۔ 20 دسمبر 2018۔ اخذ شدہ بتاریخ 20 دسمبر 2018 
  2. Elo rankings change compared to one year ago. "World Football Elo Ratings"۔ eloratings.net۔ 9 جنوری 2019۔ اخذ شدہ بتاریخ 9 جنوری 2019 
  3. "African Cup of Nations — NoConfusion over Togo death toll"۔ Reuters۔ 2010-01-09۔ 12 جنوری 2010 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 01 فروری 2010 
  4. "Sky Sports | Football News"۔ Home.skysports.com۔ 25 جنوری 2007 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 فروری 2010 
  5. "Kodjovi Obilalé n'est pas décédé des suites de ses blessures (Agence AFP)" (بزبان فرانسیسی)۔ 22 فروری 2007 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 01 فروری 2010 
  6. "Kodjovi Obilalé n'est pas décédé des suites de ses blessures (Agence AFP)" (بزبان فرانسیسی)۔ 22 فروری 2007 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 01 فروری 2010 

بیرونی روابط ترمیم