ڈھول فقیر

پاکستانی لوک گلوکار

ڈھول فقیر (انگریزی: Dhol Faqeer) (ولادت: 1 جنوری 1921ء - وفات: 22 جون 1992ء) پاکستان کے سندھ سے تعلق رکھنے والے مشہور لوک گلوکار تھے۔ ڈھول فقیر کا انتقال 22 جون 1992ء کو ہوا۔[1]

ڈھول فقیر
معلومات شخصیت
تاریخ پیدائش 1 جنوری 1921  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ وفات 23 مارچ 1992 (71 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ گلو کار  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات

ابتدائی زندگی اور تعلیمترميم

ڈھول فقیر 1 جنوری 1921ء کو پاکستان کے ضلع میرپور خاص کے پٹیون میں پیدا ہوئے تھے۔ ان کے والد فقیر محمد خاصخیلی تھے۔ ڈھول فقیر زیادہ تعلیم یافتہ نہیں تھے۔

موسیقی کیریئرترميم

ڈھول فقیر نے مختلف گلوکاروں کو مختلف مقامات پر گاتے سنا اور اس سے گانے کا طریقہ سیکھا۔ بعد میں ڈھول فقیر نے اسماعیل مری اور منتھار فقیر راجا سے موسیقی کی تعلیم حاصل کی۔ ڈھول فقیر کو ان گلوکاروں میں شامل کیا جاتا ہے جنہوں نے روایتی سندھی شاعری کے امتزاج سے سندھی موسیقی کو سدا بہار بنایا۔ وہ گانے کو عبادت سمجھتے تھے اور گانے کے لئے کچھ بھی وصول نہیں کرتے تھے۔ وہ محمد زمان طالب المولیٰ کے شاگرد تھے جنہوں نے 1948ء میں کراچی کے ریڈیو پاکستان اسٹیشن میں ان کا تعارف کرایا اور عبدالکریم بلوچ نے ڈھول فقیر کا تعارف پاکستان ٹیلی ویژن، کراچی میں کیا۔ڈھول فقیر کے گانوں کو بنیادی طور پر ریڈیو پاکستان، حیدرآباد سے نشر کیا گیا تھا۔ انہوں نے اپنا فن پیش کرنے کے لئے بہت سارے ممالک کا دورہ کیا۔[2]

ایوارڈترميم

ڈھول فقیر کو 23 مارچ 1989ء کو حکومت پاکستان نے تمغائے حسن کارکردگی سے نوازا۔ ڈھول فقیر کو تمغائے حسن کارکردگی کے علاوہ کئی علاقائی ایوارڈز بھی ملا۔[3]

وفاتترميم

.22 جون 1992ء کو گردے فیل ہونے سے ڈھول فقیر کا انتقال ہوگیا۔ انہیں پاکستان کے سندھ کے ٹنڈو الہ یار میں سپرد خاک کردیا گیا۔

حوالہ جاتترميم

  1. Book Legends of Modern Sindh, written by Prof: Hassan Bux Noonari, puvlished by: Roshni Publications 2015 Page: 72
  2. Book: Encyclopedia Sindhiana Vol: 5, Published by Sindhi Language Authority Page: 440, (آئی ایس بی این 9789699098871)
  3. http://www.sindhsalamat.com/threads/13381/. Retrieved 4 June 2016

بیرونی روابطترميم