انیس سو چوراسی (1984) انگریزی مصنف جارج آرویل کا مشہور ناول ہے۔ اس کو بیسویں صدی عیسوی کے دس بہترین لکھے گئے فکشن میں شمار کیا جاتا ہے۔

انیس سو چوراسی
(انگریزی میں: Nineteen Eighty-Four ویکی ڈیٹا پر (P1476) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
1984first.jpg

مصنف جارج اورویل[1][2]  ویکی ڈیٹا پر (P50) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اصل زبان انگریزی  ویکی ڈیٹا پر (P407) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
موضوع انسانی حقوق،  آزادی سوچ،  ہمہ گیریت  ویکی ڈیٹا پر (P921) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ادبی صنف سائنس فکشن ناول  ویکی ڈیٹا پر (P136) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ اشاعت 1949  ویکی ڈیٹا پر (P577) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
این آر پی ٹاپ 100 سائنس فکشن اینڈ فنٹاسی بکس
لی موندے کی صدی کی 100 بہترین کتابیں  ویکی ڈیٹا پر (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
او سی ایل سی 52187275  ویکی ڈیٹا پر (P243) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Fleche-defaut-droite-gris-32.png اینیمل فارم  ویکی ڈیٹا پر (P155) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png

کہانیترميم

کہانی کچھ یوں ہے کہ ایک بہت بڑے عالمی خون خرابے کے باعث دنیا اب سکڑ کر صرف 3 ریاستوں میں بٹ کر رہ گئی ہے۔ یوریشیا، ایسٹیشیا اور اوشیانا۔ ناول کا مرکزی کردار ریاست اوشیانا کا باشندہ ہے۔ اوشیانا بنیادی طور پر مغربی یورپ (انگلینڈ، فرانس وغیرہ) اور امریکا سے مل کے بنا ہے۔ مصنف کے مطابق یہاں انگریزی سوشلزم یعنی اینگساک کا نظام قائم ہے۔ اس ناول میں بتایا گیا ہے کہ کیسے ریاست اوشیانا اپنی عوام کو برین واش کرتی ہے۔ حکمرانوں نے "سچائی کی وزارت" کے نام سے ایک ادارہ قائم کررکھا ہے جو تاریخ، حالات اور واقعات کو حسب ضرورت تبدیل کرنے کا کام سر انجام دیتا ہے۔

حوالہ جاتترميم

  1. عنوان : Nineteen Eighty-Four — اشاعت اول — ناشر: ہارویل سیکر اور Secker & Warburg
  2. مصنف: Katharine M. Morsberger