لبنان کے دار الحکومت بیروت میں 4 اگست 2020ء بروز منگل یکے بعد دیگرے کئی زوردار دھماکے ہوئے۔[6][7][8] یہ دھماکے بیروت کی بندرگاہ پر ہوئے جن کے نتیجے میں تا دم تحریر 100 افراد کی ہلاکت اور 4,000 افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں؛ جب کہ بیسیوں افراد لاپتہ ہیں۔[9][10][11][12]

بیروت دھماکے 2020ء
Port of Beirut explosion aftermath 4 August 2020.jpg
دھماکوں کے بعد کا منظر

مقام بیروت، لبنان
شہر Flag of Lebanon.svg لبنان  ویکی ڈیٹا پر (P17) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ 4 اگست 2020ء (2020ء-08-04)
وقت 18:08:18 ای ای ایس ٹی (15:08:18 یو ٹی سی) (دوسرا دھماکا)
سسب دھماکا[1][2]،  دھماکا[1][2][3]  ویکی ڈیٹا پر (P828) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
متناسقات 33°54′04″N 35°31′08″E / 33.901°N 35.519°E / 33.901; 35.519متناسقات: 33°54′04″N 35°31′08″E / 33.901°N 35.519°E / 33.901; 35.519
ہلاکتیں 192+
زخمی 6,500+
لاپتہ 32 [4]شخص  ویکی ڈیٹا پر (P1446) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مالی نقصانات 10000000000 امریکی ڈالر[5]  ویکی ڈیٹا پر (P2630) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

لبنان کی جنرل سیکیورٹی کے ڈائریکٹر جنرل عباس ابراھیم کے مطابق بیروت کی بندرگاہ پر 2,750 ٹن امونیم نائٹریٹ بغیر کسی حفاظتی اقدامات کے ذخیرہ کیا گیا تھا جو ان دھماکوں کا سبب بنا۔ انہوں نے بتایا کہ یہ مواد گزشتہ 6 سال سے وہاں موجود تھا۔ ماہرین کے اندازے کے مطابق ان دھماکوں کی شدت کئی سو ٹن بارودی مواد کے برابر تھی۔[13][14]

دھماکےترميم

پہلے ایک ہلکا دھماکا ہوا جس سے شعلے بھڑکے اور دھویں کا ایک بادل فضا میں بلند ہوا اور بجلی کی چمک جیسے کوندے لپکے عینی شاہدین کے مطابق یہ آتش بازی جیسا عمل لگتا تھا۔اس کے بعد مقامی وقت کے مطابق 18:08:18 پر دوسرا اور شدید دھماکا ہوا۔ اس دھماکے نے وسطی بیروت کو ہلا کر رکھ دیا، سرخی مائل دھوئیں اور گرد کا بادل فضا میں پھیل گیا۔ یہ دھماکا اس قدر شدید تھا کہ اس کے اثرات شمالی اسرائیل اور 240 کلومیٹر(150 میل) دور قبرص میں بھی محسوس کیے گئے۔ ریاستہائے متحدہ امریکا کی جیولوجیکل سروس کے مطابق دھماکے کی شدت 3.3 درجے کے زلزلے کے برابر تھی۔

حوالہ جاتترميم

  1. https://www.nytimes.com/2020/08/05/world/middleeast/beirut-explosion-what-happened.html — اخذ شدہ بتاریخ: 5 اگست 2020
  2. https://www.sciencemediacentre.org/expert-reaction-to-beirut-explosion/ — اخذ شدہ بتاریخ: 6 اگست 2020
  3. https://www.nature.com/articles/d41586-020-02361-x — اخذ شدہ بتاریخ: 12 اگست 2020
  4. https://www.aa.com.tr/en/middle-east/death-toll-in-blast-hit-beirut-rises-to-177/1941328
  5. https://www.aljazeera.com/news/2020/08/lebanon-eyes-state-emergency-deadly-beirut-blast-live-200804234925493.html
  6. Khoury، Jack؛ Landou، Noa (اگست 4, 2020). "Massive explosion shakes Lebanese capital, buildings near Beirut port reportedly damaged". Haaretz (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 4 اگست 2020. 
  7. Mroue، Bassem (4 اگست 2020). "Massive explosion shakes Lebanon's capital Beirut". San Francisco Chronicle (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 4 اگست 2020. 
  8. Hubbard، Ben (4 اگست 2020). "Explosions Rock East Beirut". The New York Times (بزبان انگریزی). ISSN 0362-4331. اخذ شدہ بتاریخ 4 اگست 2020. 
  9. http://www.dailystar.com.lb/News/Lebanon-News/2020/Aug-05/509878-lebanon-mourns-beirut-blast-toll-expected-to-rise.ashx
  10. Chulov، Martin؛ Safi، Michael (4 اگست 2020). "Lebanon: at least 78 killed as huge explosion rocks Beirut". دی گارڈین. اخذ شدہ بتاریخ 4 اگست 2020. 
  11. Holmes، Oliver؛ Beaumont، Peter؛ Safi، Michael؛ Chulov، Martin (4 اگست 2020). "Beirut explosion: dead and wounded among 'hundreds of casualties'، says Lebanon Red Cross – live updates". The Guardian. اخذ شدہ بتاریخ اگست 4, 2020. 
  12. Gadzo، Mersiha (اگست 4, 2020). "Dozens killed, thousands wounded in Beirut blast: Live updates". Al Jazeera. اخذ شدہ بتاریخ 04 اگست 2020. 
  13. Horton، Alex (2020-08-04). "Here's what the videos of the Beirut blast tell us about the explosion". Washington Post. اخذ شدہ بتاریخ 05 اگست 2020. 
  14. "Using dimensional analysis I estimate that the energy contained in the awful #Beirut explosion was approximately 12 Terajoules".