توابین سے مراد وہ گروہ ہے۔ جنہوں نے امام حسین کو کوفہ آنے کی دعوت دی تھی مگر خوف کی بنا پر ان کی کوئی مدد نہ کی۔ انھوں نے اپنے گناہوں کے کفارہ کے لیے یہ عہد کیا کہ وہ خون حسین کا بدلہ لیں گے۔ چنانچہ اسی وجہ سے توابین کہلائے۔ توابین کے رہمنا سلیمان بن صرد خزاعی نے عراق میں علم بغاوت بلند کیا لیکن شکست کھا کر شہید ہوئے۔ بعد میں مختار ثقفی اس کے رہنما بنے اور انہوں نے قاتلین حسین کو چن چن کر مارا۔ مختار جب عبداللہ بن زبیر کے خلاف نبرد آزما ہوا تو مصعب بن زبیر نے اس کو کوفہ میں محصور کرکے شکست دی۔