یہ بیراجکالاباغ ہیڈورکس سے 80 میل جنوب کی طرف دریائے سندھ پر واقع ہے۔ اور پاکستان کا پندرھواں اور دریائے سندھ کا چوتھا بیراج ہے۔ اس کی تعمیر پر ساڑھے بارہ کروڑ روپے صرف ہوئے ہیں۔ اس سے دو نہریں نکالی گئی ہیں۔ جن میں سے ایک ضلع مظفر گڑھ کو اور دوسری ڈیرہ غازی خان کو سیراب کرتی ہے۔ اس بیراج سے لاکھوں ایکٹر زمین ہی سیراب نہیں ہوتی بلکہ دوسرے کئی فوائد بھی حاصل کیے جاتے ہیں۔ اس بیراج کی تعمیر سے ڈیرہ غازی خان تک جانے کے لیے خشکی کا راستہ نکل آیا ہے۔ اور پختہ سڑک کی تعمیر سے ڈیرہ غازی خان کادوسرے حصوں سے براہ راست تعلق قائم ہو گیا ہے۔ ہیڈ ڈرافٹ مین سید طفیل حسین شاہ کو تونسہ بیراج کے حوالے سے ان کی خدمات پر اس وقت کے صدر پاکستان فیلڈ مارشل ایوب خان نے 3 مارچ 1959کو چاندی کے تمغے سے نوازا تھا.