مرکزی مینیو کھولیں
صلاح الدین ایوبی نے سب سے پہلے خادم الحرمین الشریفین کا لقب اپنایا

خادم الحرمین الشریفین (Custodian of the Two Holy Mosques) (عربی: خادم الحرمين الشريفين) ایک صالح شاہی لقب ہے جسے بہت سے اسلامی حکمرانوں کی طرف سے استعمال کیا گیا ہے بشول ایوبی خاندان، مملوک سلاطین مصر، سلاطین عثمانی اور موجودہ دور کے شاہان سعودی عرب۔ خادم الحرمین شریفین کے معنی "دو مقدس حرم ( مسجد الحرام اور مسجد النبوی) کے خادم" کے ہیں۔

تاریخترميم

تاریخی طور پر کہا جاتا ہے کہ سب سے پہلی مرتبہ اس لقب کا استعمال صلاح الدین ایوبی کے لیے کیا گیا تھا۔[1] اس کے بعد مملوک حکمرانوں کو شکست دینے کے بعد عثمانیوں نے مکہ اور مدینہ فتح کیا تو سلطان سلیم اول نے یہ لقب اپنایا۔ سلیم اول کے بعد محمد وحید الدین (جو سلطنت عثمانیہ کے آخری سلطان تھے) تک تمام عثمانی سلطانوں کے لیے یہ لقب استعمال کیا گیا۔ سعودی عرب کے فرمانرواؤں میں سب سے پہلے شاہ فہد بن عبدالعزیز نے یہ لقب 1986ء میں اپنایا۔ اس سے پہلے سعودی بادشاہوں کے لیے صاحب جلال کا لفظ استعمال کیا جاتا تھا جسے شاہ فہد نے تبدیل کراکر خادم الحرمین شریفین کر دیا۔ شاہ فہد کی وفات کے بعد شاہ عبداللہ بن عبدالعزیز اور شاہ سلمان بن عبد العزیز آل سعود نے بھی یہی لقب اپنایا۔

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم

  1. Galal Fakkar (27 جنوری 2015)۔ "Story behind the king's title"۔ Arab News (English زبان میں)۔ Jeddah۔ اخذ شدہ بتاریخ 27 جون 2016۔ |archiveurl= اور |archive-url= ایک سے زائد مرتبہ درج ہے (معاونت); |archivedate= اور |archive-date= ایک سے زائد مرتبہ درج ہے (معاونت); |archive-url= is malformed: save command (معاونت)