دیوی ماں (انگریزی: Mother goddess) ایک دیو مالائی تصور ہونے کے ساتھ ساتھ کئی نسوانی ادب کے فلسفوں کا حصہ ہے جو نسوانی الوہیت اور تخلیق، پیدائش، تولید، جنسی اتحاد، پرورش اور زندگی کے مختلف دورانیوں کی نمائندگی کرتی ہے۔ یہ اصطلاح ان مختلف النوع شخصیات کی نمائندگی کرتی ہے جیسے کہ پتھر کے دور کی زہرہ سیارے کی دیوی یا پھر کنواری مریم۔ چوں کہ مادریت عالمی سطح کی انسانی حقیقتوں میں سے ایک ہے، اس لیے ایسی کوئی انسانی ثقافت نہیں ہے جس میں کہ مادرانہ علامت کشی معبودیت کے کسی نہ کسی درجے میں نہ پیش کی گئی ہو۔ چوں کہ مادرانہ تجسیم میں کافی اختلاف اور تنوع موجود ہے، ایک در پردہ ناتشفی بخش ضرورت یہ محسوس کی گئی ہے کہ دیوی ماں کے تصور مادرانہ تجسیم کو مزید پیچیدہ اور مفید انداز پیش کی جائے، جس میں معنویت، علامت کشی اور کار کردگی پر زور ہو۔ عالمی سطح پر ایک روایت یہ بھی ہے کہ زمین کو ماں سے جوڑ کر پیش کیا جائے[1]، جیسے کہ انگریزی میں مادر زمین یا Mother Earth کہا جاتا ہے۔ اسی طرح سے کئی ہندی اور کئی دیگر زبانوں میں وطن عزیز کو ماتر بھومی یا دھرتی ماں کہا جاتا ہے۔ اسی طرح ہندی میں بھارت کو ایک نسوانی اور گہوارگی کی پہچان سے جوڑ کر بھارت ماتا یا مادرِ ہند بھی کہا جاتا ہے۔

ویت نامی تصورات کے مطابق جنت کی دیوی ماں ہانگ ترونگ


ہندو دھرم میں دیوی ماںترميم

ہندو مت میں کئی دیویوں کو دیوی ماں کے لقب سے ملقب کیا گیا ہے اور انہیں محافظت کے ذمے کی گیرندہ تصور کیا گیا ہے۔ کثیر ہندو آبادی والے ملک بھارت میں مختلف تہواروں میں سے ایک نو راتری بھی ہے جس میں درگا کی پوجا کی جاتی ہے۔ اس موقع پر ملک کے وزیر اعظم بھی پیام جاری کیا کرتے ہیں کہ ماں جگدمبا یا درگا سبھی کے لیے امن وسکون، خوشحالی اورخوشیاں لائے گی۔ یہ بھی امید ظاہر کی جاتی ہے کہ ماں جگدمبا کے آشیرباد سے یہ کرہ ارض محفوظ، صحت مند اور خوشحال رہے گا۔[2]


مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم