موجودہ چترال جو پاکستان کا ایک ضلع ہے (جسے ماضی میں ریاست چترال کہا جاتا تھا) ہندوکش کے پہاڑوں کے دامن میں واقع ایک ریاست تھی۔ چترال کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ قیام پاکستان کے بعد جس ریاست نے پہلی بار پاکستان کے ساتھ الحاق کیا وہ چترال کی ریاست تھی اس ریاست نے غیر مشروط پر پاکستان کے ساتھ الحاق کیا۔ اس ریاست کا بادشاہ ہوتا تھا جسے چترال میں بولی جانے والی زابان کھوار میں میتار اور اردو میں مہتر کہا جاتا تھا اور اس کی بادشاہی کو میتاری کہا جاتا تھا۔ چترال قیام پاکستان کے وقت ریاست چترال کے نام سے مشہور تھا۔ اور ریاست چترال ماضی میں برطانوی راج کا باقاعدہ حصہ تھا یہ ریاست چترال کی ساری وادیوں اور ضلع غذر پر مشتمل تھا جن پر برطانوی ایجنٹ نگران تھا اور چترال کے میتار(جسے اردو میں مہتر کہا جاتا ہے) ان کے نمائندے تھے یہ سب سے بڑی ریاست تھی۔ ریاست چترال کے مہتروں کی رشتہ داریاں بعد میں ریاست امب کے نوابوں کے ساتھ ہوئیں۔ جو تنولی پٹھان ہیں۔

ریاست چترال کا جھنڈا
چترال

مزید دیکھیے ترمیم

٭ پاکستان کی نوابی ریاستیں