نعت گوئی میں چار مجموعوں پر صدارتی ایوارڈ حاصل کرنے والے نعت گو شاعر

ولادتترميم

ریاض حسین چودھری 8 نومبر 1941ء کو سیالکوٹ میں پیدا ہوئے ۔

تعلیمترميم

آپ کے والد عبدالحمید مرحوم پیشے کے اعتبار سے ایک وکیل تھے، آپ مرے کالج، سیالکوٹ کے کے طالب علم رہے اور دوران تعلیم مرے کالج میگزین کی ادارت کی ذمہ داریاں سر انجام دیتے رہے ۔

عملی زندگیترميم

پیشہ ورانہ زندگی میں پندرہ روزہ تحریک، لاہور کے چیف ایڈیٹر رہے ۔ آغا صادق محمود اور آسی ضیائی آپ کے اساتذہ میں سے ہیں ۔

نعت گوئیترميم

ان کا پہلا نعتیہ مجموعہ’’ زر معتبر ‘‘ 1995 میں طبع ہوکر منظر عام پر آیا تھا۔ اس کے بعد سے وہ اس 23 سالہ وقفے میں صرف اور صرف رسول اکرم ﷺ کی ہی مدح و ثنا میں سرگرم رہے۔ اب تک اُن کے 14 نعتیہ مجموعے منظر عام پر آکر مقبول عوام و خواص ہو چکے ہیں۔ ریاض حسین ؔ چودھری صاحب نے نعت کو قدیم روایت سے نکال کر جدید رنگ و آہنگ ، لفظ و معانی ا ور فکر سے ہمکنار کیا۔[1]

اعزازاتترميم

اُن کے بارہ نعتیہ مجموعوں میں سے تین مجموعے وزارتِ مذہبی امور حکومتِ پاکستان سے نعت گوئی کا سیرت ایوارڈ حاصل کر چکے ہیں

حمدیہ و نعتیہ مجموعےترميم

  • زرِمعتبر
  • رزقِ ثنا
  • تمنائے حضوری
  • متاعِ قلم
  • کشکولِ آرزو
  • سلام علیک
  • خلدِ سخن
  • غزل کاسہ بکف
  • طلوعِ فجر
  • آبروئے ما
  • زم زمِ عشق
  • تحدیثِ نعمت
  • کائنات محوِ درود ہے
  • لامحدود
  • برستی آنکھو خیال رکھنا
  • دبستانِ نو
  • تاجِ مدینہ
  • نظمِ نعت
  • اکائی
  • وردِ مسلسل
  • شعورِ کربلا
  • کتابِ التجا
  • نصابِ غلامی

وفاتترميم

5 اگست 2017ء کو طویل علالت کے بعد ہم سے رخصت ہوگئے،

حوالہ جاتترميم

حوالہ جات

  1. http://www.naatkainaat.org/index.php/%D8%B1%DB%8C%D8%A7%D8%B6_%D8%AD%D8%B3%DB%8C%D9%86_%DA%86%D9%88%D8%AF%DA%BE%D8%B1%DB%8C