راجکماری صوفیہ دلیپ سنگھ (8 اگست 1876ء -22 اگست 1948ء)-[3] انگلینڈ میں عورتوں کے حقوق (حق رائے دہی ) کے لیے کوشاں خواتین تنظیموں کی مشہور (suffragette) کارکن تھی۔ ان کے والد مہاراجا دلیپ سنگھ شیر پنجاب کے لقب سے جانے جاتے تھے۔ مہاراجہ رنجیت سنگھ کے فرزند تھے ،[4] جسے پنجاب کو برطانوی ہند میں شامل کرنے کے بعد ملک بدر کرکے انگلینڈ بھیج دیا گیا تھا۔ ٛوہاں انہوں نے مسیحیت سے متاثر ہوکر اس کو اپنا لیا ۔[5] . صوفیہ کی ماں مہارانی بامبا میولر تھی۔ اس کی منہ بولی ماں مہارانی ملکہ وکٹوریہ تھی۔ صوفیہ آزادیٔ نسواں کی حامی تھی اور ہیپنپٹن کورٹ محل کے ایک گھر میں رہتی تھی جسے ملکہ وکٹوریہ نے اسے عنایت کر رکھا تھا۔ اس کی چار بہنیں، (دو سوتیلی) اور چار بھائی تھے۔

صوفیہ دلیپ سنگھ
1910-Sophia-Suffragette-Duleep-Singh-fixed.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش 8 اگست 1876[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 22 اگست 1948 (72 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش لندن  ویکی ڈیٹا پر (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of the United Kingdom.svg مملکت متحدہ
Flag of the United Kingdom.svg متحدہ مملکت برطانیہ عظمی و آئر لینڈ (–12 اپریل 1927)  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والد دلیپ سنگھ[2]  ویکی ڈیٹا پر (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والدہ بمبا مولر[2]  ویکی ڈیٹا پر (P25) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بہن/بھائی
شہزادی بمبا سدرلینڈ،  وکٹر دلیپ سنگھ،  فریڈرک دلیپ سنگھ،  کیتھرائن دلیپ سنگھ[2]  ویکی ڈیٹا پر (P3373) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ حامی حقوق نسواں  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب دا پیرایج پرسن آئی ڈی: https://wikidata-externalid-url.toolforge.org/?p=4638&url_prefix=http://www.thepeerage.com/&id=p44523.htm#i445226 — بنام: Sophia Alexandra Duleep Singh — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — مصنف: Darryl Roger Lundy — خالق: Darryl Roger Lundy
  2. ^ ا ب پ اوکسفرڈ بائیوگرافی انڈیکس نمبر: https://doi.org/10.1093/ref:odnb/64781 — مدیر: Colin Matthew — عنوان : Oxford Dictionary of National Biography — ناشر: اوکسفرڈ یونیورسٹی پریس
  3. "Princess Sophia Duleep Singh – Timeline". History Heroes organization. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. 
  4. Sarna، Navtej (23 January 2015). "The princess dares: Review of Anita Anand's book "Sophia"". India Today News Magazine. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. 
  5. Anand، Anita (14 January 2015). "Sophia, the suffragette". The Hindu. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ.  الوسيط |archiveurl= و |archive-url= تكرر أكثر من مرة (معاونت); الوسيط |archivedate= و |archive-date= تكرر أكثر من مرة (معاونت)