عثمانی-صفوی جنگ (1532ء- 1555ء)

عثمانی-صفوی جنگ (1532-55) (Ottoman–Safavid War (1532–55)) وہ عظیم حریفوں کے درمیان ہونے والے کئی فوجی تنازعات میں سے ایک تھی۔ جو سلطنت عثمانیہ کے سلیمان اول اور صفوی سلطنت کے طہماسپ اول کے درمیان لڑی گئی۔

عثمانی-صفوی جنگ (1532-55)
Ottoman-Safavid War of 1532–1555
بسلسلہ عثمانی-صفوی جنگیں
Sueleymanname nahcevan.jpg
عثمانی-صفوی جنگ
تاریخ1532–1555
مقامعراق، آرمینیا، فارس
نتیجہ اماسیا امن معاہدہ
سرحدی
تبدیلیاں

عثمانیوں بین النہرین (عراق) کا ایک بڑا حصہ حاصل کر لیا، مغربی کردستان، مغربی آرمینیا، اور مغربی جارجیا[1]
فارسیوں تبریز، مشرقی جارجیا، مشرقی آرمینیا، داغستان، اور آذربائیجان پر اپنا قبضہ برقرار رکھا[2] اور ان شمال مغربی سرحدیں جنگ سے قبل کی صورت میں برقرار رہیں۔

ارض روم، وان، اور شہر زور حائلی علاقہ بن گئے
محارب
Safavid Flag.svg صفوی سلطنت Flag of the Ottoman Empire (1844–1922).svg سلطنت عثمانیہ
کمانڈر اور رہنما
Safavid Flag.svg طہماسپ اول

سلطنت عثمانیہ کا پرچم سلیمان اعظم
سلطنت عثمانیہ کا پرچم پارگلی ابراہیم پاشا (1535 میں استنبول واپس بھیجنے تک)
سلطنت عثمانیہ کا پرچم سکندر چلبی (1535 میں اس کی سزائے موت تک)


سلطنت عثمانیہ کا پرچم سلیم ثانی (1553-1555 نخجوان مہم پر)
سلطنت عثمانیہ کا پرچم القاص مرزا جنگی قیدی
طاقت
60,000 جوان
10 توپیں
200,000 جوان
300 توپیں

حوالہ جاتترميم

  1. The Reign of Suleiman the Magnificent, 1520-1566, V.J. Parry, A History of the Ottoman Empire to 1730, ed. M.A. Cook (Cambridge University Press, 1976), 94.
  2. A Global Chronology of Conflict: From the Ancient World to the Modern Middle East, Vol. II, ed. Spencer C. Tucker, (ABC-CLIO, 2010). 516.