گُدازه (انگریزی: Lava) سے مراد ایسی پگھلی ہوئی چٹانیں ہیں جو کسی آتش فشاں سے اس کے پھٹنے کے دوران نکلتی ہیں۔ بعد میں یہ پگھلی ہوئی چٹانیں ٹھنڈی ہو کر دوبارہ ٹھوس شکل اختیار کر لیتی ہیں۔ یہ پگھلی ہوئی چٹانیں کئی سیاروں بشمول زمین کے اور دیگر سیارچوں کے اندر پائی جاتی ہیں۔ آتش فشاں کے سوراخ سے نکلتے وقت گدازه کا درجہ حرارت 700 سے 1٫200 ڈگری سینٹی گریڈ تک ہوتا ہے۔ پانی کی نسبت گدازه کی کثافت ایک لاکھ گنا زیادہ ہوتی ہے اور ٹھوس شکل اختیار کرنے سے قبل گدازه طویل فاصلے تک سفر کر سکتا ہے۔

گدازه کے بہاؤ سے مراد آتش فشاں کے پھٹنے سے شروع ہونے والا گدازه کا سفر ہوتا ہے۔ جب یہ سفر ختم ہوتا ہے تو گدازه ٹھنڈا ہو کر ٹھوس شکل اختیار کر لیتا ہے۔ عام طور پر گدازه کے بہاؤ کو گدازه ہی کہا جاتا ہے۔ جب آتش فشاں دھماکے سے پھٹتا ہے تو اس سے گدازه کے علاوہ راکھ اور دیگر اجزاء بھی نکلتے ہیں۔ ان سب اجزاء کو مجموعی طور پر ٹیفرا کہتے ہیں۔ لفظ لاوا اطالوی یا لاطینی سے نکلا ہے جس کے معنی گرنا یا پھسلنا ہیں۔

نگار خانہترميم