غازی محمد حسین (Ghazi Muhammad Hussin) پاک فوج میں حوالدار تھے۔ یہ تحصیل تورکھو ضلع چترال کے ایک گاؤں وادی کھوت کے کھونارٹیک میں 64 میں ایک نامور خوشے گھرانے میں پیدا ہوئے۔[1][2] پہلا تمغہء جمہوریت پانے والے حوالدار غازی محمد حسین خوشے قبیلے سے تعلق رکھنے والے پہلی شخصیت ہیں۔ حکومت پاکستان کی جانب کارگل جنگ میں حصہ لیا، شاندار فوجی خدمات کے پیشِ نظر آپ کو کئی فوجی اعزازات سے نوازا گیا۔


حوالدار محمد حسین

تمغہ جمہوریت وصول کنندہ
پیدائش10 نومبر 1964ء
کھونارٹیک، ضلع چترال، صوبہ سرحد(خیبر پختونخوا) پاکستان
وفاداریFlag of Pakistan.svg پاکستان
Flag of Pakistan.svg پاکستان
سروس/شاخ پاکستان فوج
 پاکستان فوج
سالہائے فعالیت1980–2000
درجہحوالدار
یونٹChitral Scouts
مقابلے/جنگیںمعرکہء کارگل
پاک بھارت جنگ
اعزازاتتمغہء جمہوریت

پاک فوج]]اور حکومت پاکستان نے آپ کی وطن عزیز کے لیے بے لوث خدمات کے اعتراف میں بے شمار اعزازت سے نواز ہے جن میں تمغہء دفاع کا اعزاز سر فہرست ہے۔ محمد حسین ایک سماجی کارکن بھی ہیں اور چترال کی تاریخ، معاشرت اور تہذیب و تمدن پر تحقیق کر رہے ہیں۔-

اعزازاتترميم

  • تمغہء دفاع
  • ڈیموکریسی میڈل
  • گولڈن جوبلی میڈل
  • یوم آزدی پاکستان میڈل
  • ایس وی آیی میڈل
  • ٹی کے تھری میڈل

حوالہ جاتترميم

  1. "Muhammad Hussain a hero of Kargil". Unique Pakistan. اخذ شدہ بتاریخ 14 اگست 2014. 
  2. "Hawaldar Ghazi Muhammad Hussain (Tamgha-e- Jamhooriat)". Pakistan 360 degrees. 26 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 14 اگست 2014.