نشہ آوری جسے کبھی کبھی عادی شرابی پن بھی کہا جاتا ہے، ایک فعلیاتی حالت ہے جس کی وجہ سے نفسیاتی مبادلہ شعور جیسی صورت حال پیدا ہو سکتی ہے۔ نشہ آوری کی علامات میں سرور، چہرے کی سرخی اور کم ہوتا سماج کا ڈر کم خوراکوں میں ہو سکتا ہے،[1] زائد خوراکوں میں توازن کا متواتر انداز میں گرنا، فیصلہ سازی کی صلاحیت میں کمی، قے، اندرونی کان میں خرابی، وغیرہ ہو سکتے ہیں۔ خون میں شراب کی مقدار کے حد سے زیادہ ہونے کی صورت میں کوما یا موت بھی ممکن ہے۔

نشہ آوری
Michelangelo drunken Noah.jpg
میشیلینجیلو کی جانب سے اتاری گئی تصویر خمارگزیدہ نوح (The Drunkenness of Noah)
خصوصیتزہریات، دماغی علاج

حوالہ جاتترميم

  1. Zeller، Scott L.؛ Nordstrom، Kimberly D.؛ Wilson، Michael P. (2017-02-15). The Diagnosis and Management of Agitation (بزبان انگریزی). Cambridge University Press. ISBN 9781107148123. 26 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 24 فروری 2018. 
  • Bales, Robert F. "Attitudes toward Drinking in the Irish Culture". In: Pittman, David J. and Snyder, Charles R. (Eds.) Society, Culture and Drinking Patterns. New York: Wiley, 1962, pp. 157–187.
  • Gentry, Kenneth L., Jr., God Gave Wine: What the Bible Says about Alcohol. Lincoln, Calif.: Oakdown, 2001.
  • Rorabaugh, W.J. "The Alcoholic Republic," Chapter 2 & 5, اوکسفرڈ یونیورسٹی پریس.
  • Sigmund, Paul. St. Thomas Aquinas On Politics and Ethics. W.W. Norton & Company, Inc, 1988, p. 77.
  • Walton, Stuart. Out of It. A Cultural History of Intoxication. پینگوئن (ادارہ), 2002. آئی ایس بی این 0-14-027977-6.

بیرونی روابطترميم

Classification
External resources