نور الدین عتر

شامی محدث

نور الدین عتر بن محمد بن حسن بن عتر (1937ء-2020ء) محدث شام اور فقیہ تھے۔ آپ کا سلسلہ نسب حسن بن علی المرتضیٰ تک پہنچتا ہے آپ کے شیخ عبد اللہ الحماد نے آپ کو "اصیل الجدین" کہا کرتے تھے جس کا مطلب یہ ہے کہ والد اور والدہ کی طرف سے آپ کا سلسلہ محمد بن عبد اللہ پیغمبر اسلام کی طرف متصل ہے۔ چونکہ نور الدین عتر پیغمبر اسلام محمد بن عبد اللہ کی آل و اولاد سے ہیں اور اولاد کو عربی میں "عِتْر" کہا جاتا ہے تو عتر کے لقب سے ملقب ہوئے۔

نور الدین عتر
(عربی میں: نُورُ الدين عتر الحُسيني ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
نور الدين عتر.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش 28 اپریل 1937  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
حلب  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 23 ستمبر 2020 (83 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دمشق  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Syria (1930–1958, 1961–1963).svg جمہوریہ شام (1937–1958)
Flag of Syria.svg متحدہ عرب جمہوریہ (1958–1961)
Flag of Syria.svg شام (1961–2020)  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ الازہر (–1964)  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تعلیمی اسناد ڈاکٹریٹ  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ محدث،  عالم،  فقیہ،  استاد جامعہ  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان عربی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ملازمت جامعہ اسلامیہ، مدینہ منورہ  ویکی ڈیٹا پر (P108) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
P islam.svg باب اسلام

ولادت و تعلیمترميم

نور الدین عتر شام کے شہر حلب میں بروز بدھ 17 صفر المظفر 1356ھ بمطابق 28 اپریل 1937ء کو پیدا ہوئے۔ آپ کی ولادت حلب کے محلہ بسان میں ہوئی یہ فصیلہ اور باب نیراب کے درمیان میں واقع ہے یہ محلہ بستان علم کے لحاظ سے مشہور ہے حتیٰ کہ اس محلہ کا نام حارة الدین و الایمان ہے اور بعض نام ور علما کی نسبت بھی اس محلہ کی طرف کی جاتی ہے۔ آپ کا خاندان بلاد شام میں تحقیق و تألیف کے ذریعے علوم اسلامیہ کو پھیلانے میں مصروف عمل تھا۔ اس خاندان سے تعلق رکھنے والے علما میں آپ کے دادا شیخ محمد نجیب اور آپ کے ماموں شیخ محدث عبد اللّٰہ سراج الدین کے نام سرِ فہرست ہیں۔ آپ نے ثانویہ شرعیہ شام میں جاری رکھا ثانوی تک پھر 1954ء میں مزید کلیہ شرعیہ کی تعلیم حاصل کرنے کے لیے جامعہ ازھر مصر چلے گئے اور وہیں پڑھتے رہے یہاں تک کہ 1958ء میں اول پوزیشن کے ساتھ جامعہ ازہر سے فارغ التحصیل ہوئے پھر آپ واپس حلب آگئے اور تدریس کا سلسلہ جاری رکھا اسی دوران میں آپ دوبارہ جامعہ ازہر چلے گئے کہ شعبہ تفسیر اور حدیث میں دراسات کو مکمل کریں 1964ء میں آپ نے جامعہ ازہر سے شہادت العالمیہ شعبہ حدیث میں ممتاز حیثیت سے مکمل کیا بعد ازاں اسی جامعہ دمشق استاذ علوم القرآن و الحدیث کے درجہ پر مقرر ہوئے۔

شیخ نور الدین عتر نے بلادِ اسلامیہ میں علم کی خاطر سفر بھی کیے جیسے متحدہ عرب امارات، کویت، عرب، بھارت، ترکی، اردن، الجزائر اسی طرح آپ کا معمول تھا کہ مختلف ممالک میں جا کر دُروس کو جاری رکھتے۔

ذاتی زندگیترميم

شیخ نور الدین عتر نے علامہ عبد اللّٰہ سراج الدین کی بیٹی سے نکاح کیا جس سے آپ کے یہاں اولاد ہوئی جن میں 3 بیٹے اور 1 بیٹی شامل ہیں جن کے نام یہ ہیں: محمد مجاھد، عبدالرحیم، یحییٰ، راویہ۔

تصنیفاتترميم

شیخ نور الدین عتر نے کثیر تصانیف وتالیفات پر کام کیا ہے جن کی تعداد 50 (پچاس) سے زائد ہیں آپ کی تحقیق و تآلیف و تصانیف پانچ اقسام کی ہیں

  • کتب تفسیر و علومہ
    • علوم القرآن الکریم
    • محاضرات فی تفسیر القرآن الکریم
    • تفسیر سورۃ الفاتحہ ام الکتاب
    • القرآن الکریم و الدراسات الادبیہ
    • احکام القرآن
    • تفسیر و استنباط
    • کیف تتوجہ الی العلوم والقرآن الکریم
    • الروایة فی تفسیر الجلالین و نقد مافیہ من روایات باطلة والسرائیلیات
  • کتب حدیث
    • منھج النقد فی علوم الحدیث
    • اصول الجراح و التعدیل
    • الامام الترمذی و الموازنة بین جامعہ و بین الصحیحین
    • اعلام الانام شرح بلوغ المرام لابن حجر عسقلانی
    • لمحات موجزة فی اصول علل الحدیث
    • معجم المصطلحات الحدیثیہ
    • السنة المطھرة و التحریات
    • فی ظلال الحدیث النبوی
    • علم الحدیث و الدراسات الادبیہ
    • مناھج المحدثین العامة فی الروایة التصنیف
    • جوامع الاسلام بمن احادیث سید الانام علیہ افضل الصلاۃ والسلام
    • فضل الحدیث النبوی الشریف وجھود الامة فی حفظہ
  • کتب فقہیہ
    • الحج و العمرۃ فی الفقہ الاسلامی
    • المعاملات المصرفیہ و الربویة و علاجھا فی الاسلام
    • ھدی النبی صلی اللّٰہ علیہ وسلم فی الصلاۃ الخاصہ
    • ابغض الحلال
    • ماھو الحج
    • المفاصلة بین الافراد و القرآن و التمتع فی الحج
  • اصلاحی و معاشرتی کتب
    • ماذا عن المرأة
    • النفخات العطریة من سیرة خبر البریة (صلی اللّٰہ علیہ وسلم)
    • الاتجاھات العامۃ للاجتہاد و مکانة
    • صفحات من حیاة الامام شیخ الاسلام الشیخ عبداللّٰہ السراج الدین الحسینی
    • فکر المسلم و تحدیات الاف الثانیہ
    • حب الرسول صلی اللّٰہ علیہ وسلم من الایمان
  • کتب محققہ
    • علوم الحدیث لابن الصلاح
    • شرح علل الحدیث لابن رجب
    • المغنی فی الضعفاء
    • حاشیہ نزھةالنظر فی توضیح نخبةالفکر فی مصطلح اھل الاثر
    • حاشیہ ارشاد طلاب الحقائق الی معرفة سنن خیر الخلائق
    • الرحلة فی طلب الحدیث للخطیب البغدادی
    • ھدایۃ السالک الی المذاھب الاربعة فی المناسک لابن جماعہ
      مسلک: اہل السنۃ

حوالہ جاتترميم

  1. وفاة نور الدين عتر.. لمحة عن إنجازات أحد أعلام الحديث في العصر الحالي — اخذ شدہ بتاریخ: 25 ستمبر 2020 — سے آرکائیو اصل فی 25 ستمبر 2020 — شائع شدہ از: 23 ستمبر 2020