ہندو دیومالا اس کا مصدر ’ وا ‘ یعنی ہوا کا جھونکا ہے۔ وایو پران اور اس کے اوتار کے لیے کہا جاتا ہے۔ رگ وید میں سوائے ایک جگہ کے جہاں اسے پرش کا سانس کہا گیا ہے ہر جگہ آندھی یا ہوا کے لیے برتا گیا ہے۔ رگ وید کے اس بیان کی وضاحت سے ’ نفس حیات ‘ یعنی ’ پران ‘ کا تصور پیدا ہوا ۔ اتھر وید کے مطابق وایو کے ساتھ پاک کرنے، بدقسمتی سے نجات دلانے اور دشمنوں کی کمانیں برباد کرنے کی قوت وابستہ کی جاتی رہی ہے۔ وایو مویشیوں کے قرب میں خوش رہتا ہے اور پھول اس کے نزدیک مقدس ہیں۔ رگ وید میں اسے اندر کا مقرب دکھایا گیا ہے، جہاں وہ اس کے ہمراہ سات گھوڑے جتے رتھ میں پایا جاتا ہے۔ وید عہد کے بعد وایو پانچ بنیادی عناصر میں ایک خیال کیا جانے لگا۔ اسے پانچ واسوؤں میں بھی گنا جاتا ہے۔ افق کا شمال مغربی چوتھائی حصہ اس سے وابستہ کر دیا گیا۔ آیو وید میں وایو انسانی جسم سے خارج ہونے والا عنصر قرار دیا ہے، جو اسے پاگل کر سکتا ہے۔[1]

وایو دیو
ہوا کے بھگوان
رکن پنج بھوتا
Vayu Deva.jpg
شری وایو دیو اپنی سواری غزال پر براجمان
ملحقہدیو
دكپال
مسکنگندھاوتی
منتراُوم وایووے نماہا
ہتھیارپرچم
سواریغزال
ذاتی معلومات
شریک حیاتسو وستی، بھرارتی
اولادہنومان (بیٹا)
بھیم (بیٹا)، دروپدی (بہو)

حوالہ جاتترميم

  1. منو دھرم شاشتر Glossary کشاف اصطلاحات۔ ترجمہ ارشد رازی