مرکزی مینیو کھولیں

پران

قدیم ہندو مذہبی متن
ضد ابہام صفحات کے لیے معاونت زیر نظر مضمون مذہبی کتاب کے بارے میں کے بارے میں ہے۔ اداکار پران کے لیے پران (اداکار) دیکھیے۔
15 ویں اور 18ویں صدی کی پران

ہندو مت کی مذہبی کتابوں میں سب سے بڑا درجہ ’’ویدوں‘‘ کا ہے جن کے بارے میں ان کا عقیدہ ہے کہ یہ ’’ایش وانی‘‘ یعنی خدا کا کلام ہے۔ ’’وید‘‘ چار ہیں:

  1. رگ وید
  2. سام وید
  3. اتھروید
  4. یجروید

ان چار ویدوں کے علاوہ اپنشد، پُران اسمرتیاں وغیرہ کو ان کی مذہبی کتابوں کا درجہ حاصل ہے۔ ان کی کل تعداد ’’مترمشر‘‘ کے مطابق 57 ہے اور محقق ’’نیل کنڑ‘‘ کے مطابق 97 ہے۔ ایک دوسرے ہندو محقق ’’کملاکر‘‘ نے ان کی تعداد 131 بتائی ہے۔[1]

متسیہ پُرانترميم

اِن ہی پُرانوں میں ایک مشہور پُران کا نام متسیہ پران ہے۔ متسیہ کا مطلب مچھلی ہے۔ اس کتاب سے پتہ چلتا ہے کہ صرف ایک ہی دیوی ہے جسے ہندوستان کے مختلف حصوں میں الگ الگ ناموں سے جانا جاتا تھا لیکن وقت کے ساتھ لوگوں نے انھیں مختلف دیویوں کے طور پر ماننا شروع کر دیا۔ بنگال کے علاقے کے لوگ اس ایک دیوی کو درگا کے نام سے پُکارتے تھے۔[2]

وِشْنُو پُرانترميم

ایک اور مشہور کتب وِشْنُو پُران میں صفات الٰہیہ حسب ذیل مذکور ہیں: "مخلوق کو پیدا کرنے‘ پرورش کرنے اور تباہ کرنے کے میرے اوصاف کی وجہ سے ہے۔ میرے ہی برہما، وشنو، شیو کے تین فرق ہوئے ‘حقیقتًا میری صورت ہمیشہ بغیر کسی شکل کے ایک رہی ہے۔" [3]

حوالہ جاتترميم

مزید دیکھیےترميم