ویکی اسلام ایک مخالف اسلام اور اسلام کا خوف پھیلانے والی ویب سائٹ ہے،[1] حالانکہ اس کا دعوٰی ہے کہ وہ محض اسلام کا تنقیدی جائزہ لیتی ہے۔ یہ ویب سائٹ 2006 میں "فیتھ فریڈم انٹرنیشنل" کی جانب سے وجود آئی تھی اور اس کا مقصد یہ بتایا گیا تھا کہ یہ "مسلمانوں کو ترکِ اسلام میں مدد کرے گی"۔ اس بات کی گواہی کئی ذرائع ابلاغ سے جن میں ایسوسی ایٹیڈ پریس بھی شامل ہے، دی گئی ہے کہ یہ ویب سائٹ "اسلام کا ایک گونہ نظریہ" پیش کرتی ہے تاکہ "مسلمان پسماندہ اور احمق لگیں" جبکہ خود ایک ایسی ویب سائٹ بنی ہوئی تھی جو صرف اسلام پر تنقید کرتی تھی۔[2]

Wikiislam logo.png
سائٹ کی قسم
اسلام سے خوف زدہ
دستیابانگریزی
قیام2006
صدر دفترواشنگٹن
ہوسٹن، ٹیکساس
، ریاستہائے متحدہ امریکہ
کلیدی شخصیاتعلی سینا
ویب سائٹWikiislam.net
اشتہاراتنہیں
اندراجمحدود (صارفین اندراج تو کرسکتے ہیں، تاہم ترامیم پر بڑی حد تک نظر رکھی جاتی ہے)
نوجودہ حیثیتفعال

ایک 67 صفحات پر مشتمل رپورٹ جو کئی یورپی تحقیقی اداروں کی جانب سے یورور (EUROFOR ) کو پیش کی گئی تھی، 2007 میں اس رجحان کی تصدیق کر چکی ہے۔[1] یہ ویب سائٹ مسلمانوں کو تعاون کی دعوت نہیں دیتی جیساکہ عمومی سوالات کے قطعے میں اس کے مالک کی جانب سے کہا گیا ہے جو کینیڈا میں آباد ہے اور اس کی ویب سائٹ واشنگٹن سے چلتی ہے (حالانکہ کئی بار ویب سائٹ پتے جاننے کے اہم ذریعے WHOIS کے مطابق یہ ویب سائٹ ہوسٹن، ٹیکساس میں بتائی گئی ہے)۔[3]

تاریخترميم

ستمبر 2006 میں فیتھ فریڈم انٹرنیشنل (ایف ایف آئی) - جو خود کو "عالمی سطح پر سابق مسلمانوں کی تحریک کی جڑ" اور "زور پکڑتی اسلامی دھمکی سے سبھی پریشان لوگ" بتاتی ہے، ویکی اسلام کا آغاز کر چکی ہے۔ یہ ایف ایف آئی کے آغاز کے پانچ سال بعد کی بات ہے جو 2001 میں ستمبر 11 کے دہشت گردانہ حملوں کے فوری بعد ہوا تھا۔[1][2] ایک فورم جو ایف ایف آئی ویب سائٹ پر تھی مؤرخہ پیر ستمبر 04، 2006 شام 6:23 بجے ایک صارف جس کا نام "ویکی اسلام- ایڈمِن" تھا یہ تبصرہ پوسٹ کیا: "www.wikiIslam.com is Faithfreedom's own wiki" یعنی ویکی اسلام دراصل فیتھ فریڈم ہی کی ویکی ہے۔ یہ تبصرہ حال تک بھی اس فورم میں دیکھا گیا تھا اور اسے ایک اسٹیکی تھریڈ سمجھا گیا تھا (ایک اسٹیکی تھریڈ وہ مکالمہ ہوتا ہے جو کسی فورم کے اوپر پھنس جاتا ہے جسے سب لوگ اس کی اہمیت کی وجہ سے دیکھتے ہیں)۔ حالانکہ ویکی اسلام اس بات کی سختی سے تردید کرتی ہے۔[4] پروفیسر گوران لارسن نے اپنی ایک رپورٹ میں دعوٰی کیا کہ یہ ویب سائٹ دسمبر 4 2006 سے چل رہی ہے۔[1]

ویب سائٹ کا مالک اور غالبًا ایف ایف آئی کے واحد معاون نے وہی سافٹ ویر کا استعمال کیا جو ویکیپیڈیا پر مستعمل ہے (جسے میڈیاویکی کہا جاتا ہے اور جو انٹرنیٹ پر مفت دستیاب ہے۔ مگر ویکیپیڈیا کے بالمقابل یہاں مضامین کی ترمیم تک رسائی عوام کے لیے بے حد دشوار ہے۔[1][2] ہر ترمیم کی جانچ "خاص معاونین" یا "جائزہ کنندوں" کی جانب سے کی جاتی ہے جو ترمیم کو منظور یا نامنطور کرسکتے ہیں۔ ویکی اسلام ہی کی شماریات کی رو سے 2,793 درج شدہ صارفین میں سے صرف 6 صارفین کو منتظم کا عہدہ حاصل ہے، جس سے ویب سائٹ کی زوردار جانچ پڑتال کا اندازہ کیا جاسکتا ہے۔[5]

سورہ میڈیا، انڈونیشیا کا ایک خبررساں ادارہ اس بات کا خلاصہ کر چکا ہے کہ سرسری نظر میں یہ ویب سائٹ مکمل مذہبی مواد کا آئینہ دار ہو کر بھی صرف منفی مواد اور اسلام کی تنقید پر مرکوز ہے۔[1][2] اس کے برعکس ویکی پیڈیا عام معلومات کا مجموعہ ہے۔

نگارخانہترميم

شماریاتترميم

ویکی اسلام کو کنٹرول کرنے والی ویب سائٹ فیتھ فریڈم انٹرنیشنل ہر دن 10,000 لوگوں کی جانب سے دیکھی جاتی ہے اور ماہانہ 1,000,000 ویب سائٹ کے دیدار کرنے والوں کی تعداد 1,000,000 ہے۔[2] اس ویب سائٹ کے صرف گیارہ فعال صارف ہیں۔ اس ویب سائٹ کے سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضامین "صفحۂ اول"، "سُنیتا ولیمس (اسلام سے مکالمہ)"، "72 کنواریاں"، "معروف سابق مسلمان"، "ترکِ اسلام کرنے والے لوگ"،"عائشہ کی وداعی کے وقت عمر"، "ذاکر نائیک کی تردید میں"، "مسلمانوں سے پوچھنے کے سوالات"، "غیر مسلموں کی مذہب کے نام پر زیادتی" وغیرہ شامل ہیں۔[5]

جانب داری اور نفرت کا ثبوتترميم

تعلیمی حلقوں کے اعتبار سےترميم

 
ویکی اسلام کی "پالیسی اور گائڈلائنز" کا ایک سکرین شاٹ جس کے مطابق مسلمانوں کو مضامین میں ترمیم سے روکا گیا۔ یہ پیام کئی دفعے رونما ہوتا ہے، مگر کئی بار ہٹا بھی دیا گیا ہے۔[1]

جرمنی کی تنظیم Europäisches Migrationszentrum، لرن آئی ٹی، دی نالج فاؤنڈیشن اور لینیئس سنٹر فار ری سرچ آن لرننگ، اِنٹَریکشن اینڈ میڈئیٹیڈ کمیونی کیشن اِن کنٹیم پو رے ری سوسائٹی (لِن سی ایس) اور سویڈش ری سرچ کونسل نے 2007 میں ایک تعلیمی رپورٹ شائع کی جس کی رو سے ویکی اسلام کا اصل مقصد اسلام اور مسلمانوں کو عادتًا اور منفی انداز میں آن لائن پیش کیا کیا جائے حالانکہ اس مطالعے میں یہ بھی کہا گیا کہ کچھ استثنائی مواد کو چھوڑکر یہ ویب سائٹ کلیۃً اسلام سے خوف پر مبنی ہے۔[1][2]

پروفیسر گوران لارسن کے مطابق جو سویڈن کی گوتھن برگ یونیورسٹی میں شعبۂ ادب، مذاہب وتخیل کی تاریخ میں مطالعۂ مذہب کے سینئر لیکچرر ہیں اور اسلام اور مسلمانوں کے معاملوں میں ماہر مانے جاتے ہیں[6] اور جنہوں نے ویکی اسلام پر ریورٹ تیار کی ہے، نے دعوٰی کیا ہے کہ یہ ویب مسلمانوں کی غلط نمائندگی کرتی ہے۔ انہوں نے کہا: میرا تاثر۔.. " ویکی اسلام نے صرف مسلمانوں کو جاہل، پسماندہ اور احمق" ظاہر کرنے کی کوشش کی۔ مگر اس کے ساتھ ہی انہوں نے یہ بھی کیا "چونکہ یہاں دیگر ویب سائٹس کا مواد بھی شامل ہے، اس لیے یہ کہنا کہ ویب سائٹ کی ساری معلومات اسلام سے خوف پر مبنی ہے مشکل ہے۔[1][2]

ایک قابل ذکر پہلو یہ ہے کہ یہ ویب سائٹ اناجیل اربعہ کے مبلغوں اور بنیادپرست مسیحیوں اور نوتشکیل شدہ قدامت پسند امریکی مصنفوں کی جانب سے بطور حوالہ پیش کی جا رہی ہے جس کا مقصد مسیحیت اور یہودیت کو چھوڑکر دیگر مذاہب کو شیطانی صفات کا حامل بتانا ہے۔ اسی سوچ سے اُپجنے والی کتابوں کے اہم موضوعات "عالمی تباہی"، "قرب قیامت"، مسلمانوں، مسیحیوں اور یہودیوں میں تصادم اور جیساکہ وہ لوگ پیش کرتے ہیں، اسلامی دہشت گردی۔[7][8]

مزید شواہدترميم

ویکی اسلام پر معلومات کے لیے تلاش کر رہے بہت سے بلاگرز ویکی اسلام پر وہی نتائج پر پہنچ رہے ہیں کہ یہ ایک سائٹ ہے جس کا بنیادی مقصد اسلام اور مسلمانوں پر ایک غیر جانب دار نقطہ نظر سے حملہ کرنے کے لیے کم ہی بنائی گئی ہے۔ اس کے برعکس یہ جانبداری سے کام لیتی ہے۔ کچھ ٓبلاگروں نے اس معاملے کو اٹھایا ہے، جیسے کہ نائٹس ویکی بلاگ (KnightsWiki blog) جسے کنٹرول کرنے والی ویب سائٹ KnightsWiki.org ایک غیر رسمی معلومات کا ذریعہ ہے جو یونیورسٹی آف سنٹرل فلوریڈا کے اساتذہ اور متعلمین کی جانب سے بنائی بھی گئی ہے اور استعمال بھی کی جاتی ہے۔[9][10] اس بلاگ کا اصل مصنف کہتا ہے:

مجھے حیرت ہوتی ہے کہ کس طرح خطرناک غیرجانبداری سے خالی اور عمومی اعتبار سے اسلام سے خوفزدہ ویکی اسلام ڈاٹ نیٹ کے مضامین کی فطرت ہے۔

وہ مزید کہتا ہے:

میں نے کچھ گوگل سے تلاش کرنے کی کوشش کی، اور پتہ چلتا ہے کہ میں اکیلا نہیں ہوں۔ درحقیقت، انٹرنیٹ پر ویکی اسلام ڈاٹ نیٹ کا بیش تر مواد گوگل پر ویکی اسلام پر تنقید کے عنوان سے اشاریہ بند ہے کیونکہ مضامین اسلام سے خوف پر مبنی ہیں اور غیرجانبدار نقطہ نظر فراہم نہیں کرتے۔

ایک اور بلاگنگ ویب سائٹ qahiri.wordpress.com کافی مواد فراہم کرتی ہے کہ ویکی اسلام سختی سے اپنے مضامین میں جانبدار ہے ان کے مضمون میں جس کا انگریزی میں عنوان تھا۔"Dealing with Doubt: finding certainty when faith is attacked".[11]

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب پ ت ٹ ث ج چ ح Larsson, Göran; Swedish Research Council, learnIT, Berliner Institut für Vergleichende Sozialforschung/Europäisches Migrationszentrum, Knowledge Foundation (KK-stiftelsen), Linnaeus Centre for Research on Learning, Interaction, and Mediated Communication in Contemporary Society (LinCS) (2007). "Cyber-Islamophobia? The case of WikiIslam"[مردہ ربط] (in English). CONTEMPORARY ISLAM (Sweden) Volume 1, Number 1 (Issue #7): 67. doi:10.1007/s11562-007-0002-2. Download Part of the Report Here[مردہ ربط]
  2. ^ ا ب پ ت ٹ ث ج "WikiIslam, Encyclopedia of Islam under the pretext Wrong! آرکائیو شدہ [Date missing] بذریعہ suaramedia.com [Error: unknown archive URL]" (in Indonesian). suaramedia.com. چہارشنبہ، جون 29، 2011. ماخوذ 24 جنوری 2012
  3. "ہُواِزْ کی جانچ کا نتیجہ". ماخوذ 24 جنوری 2012.
  4. http://www.faithfreedom.org/forum/viewtopic.php?t=27895&sid=fe646291895af124f79e63e6b5f5e3f5
  5. ^ ا ب "شماریات". ماخوذ 20 ستمبر 2015.
  6. Larsson, Göran. "Biosketch: Professor Göran Larsson" (انگریزی میں). گوتھن برگ یونیورسٹی۔ ماخوذ 25 جنوری 2012.
  7. Braley, Ron. Finding the End of the World. xulonpress.com.
  8. Graff, Ron; Dolphin, Lambert. Connecting the Dots: A Handbook of Bible Prophecy.
  9. WikiIslam <MuslimWiki آرکائیو شدہ [Date missing] بذریعہ blog.knightswiki.org [Error: unknown archive URL], پیر، مارچ 12، 2012
  10. Main Page Knight's Wiki آرکائیو شدہ [Date missing] بذریعہ knightswiki.org [Error: unknown archive URL], Knights' Wiki is an unofficial information resource created for and by faculty, students, and staff at the University of Central Florida]
  11. Dealing with Doubt: finding certainty when faith is attacked, 06 01 2011, al-Qãhırıï

خارجی روابطترميم