گنو (GNU) ایک یونکس جیسا اشتغالی نظام ہے جسے گنو منصوبہ (GNU project) نے تیار کیا۔

گنو
Logo
آپریٹنگ سسٹم خاندانیونکس
حالت کاراصدار
دستیاب زبانیںکثیر اللسانی
تقویت یافتہ پلیٹ فارمزx86, x86-64
کرنل طرزمائیکرو کرنل
اجازت نامہگنو جنرل پبلک لائسنس مفتوح سافٹ ویئر لائسنس
سرکاری ویب سائٹگنو

تاریخترميم

گنو اشتغالی نظام کی منصوبہ بندی کا اعلان 27 ستمبر، 1983 کو کیا گیا۔
مصنع لطیفی ارتقا آغاز 5 جنوری، 1984 کو ہوا جب رچرڈ سٹالمان (richard stallman) نے میسا چوسٹس انسٹی ٹیوٹ اف ٹیکنالوجی (mit) سے نوکری چھوڑ کر گنو پر کام شروع کیا تا کہ ملکیتی دعوی کا امکان ختم ہو جائے۔

گنو کا بالتکرار مخفف "!GNU's Not Unix" "گنو یونکس نہیں ہے"۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ گنو یونکس سے ملتا جلتا ہے مگر یہ ایک نیا اشتغالی نظام ہے جس کی تیاری میں یونکس سے کچھ بھی نقل نہیں کیا گیا۔

اجازاتترميم

گنو عمومی العوام اجازہ (GNU general public license - gpl), گنو اصغر عمومی العوام اجازہ (GNU lesser general public license - lgpl)، گنو آزاد مسوداتی اجازہ (GNU free documentation license - gfdl) گنو کے لیے لکھے گئے تھے۔

مزید دیکھیےترميم

آزاد مصنع لطیف کی تاریخ

بیرونی روابطترميم

حوالہ جاتترميم